اب پہلے جیسے معیاری کرکٹرز دیکھنے میں نہیں آتے :عبدالرزاق

سابق پاکستانی آل راؤنڈر عبدالرزاق کا کہنا ہے کہ اب پہلے جیسے معیاری کرکٹرز دیکھنے میں نہیں آتے کیونکہ موجودہ پیسرز پرانے وقتوں کی طرح حریف بلے باز کے دل میں خوف پیدا نہیں کرپاتے جب کہ کچھ ہی بیٹسمین یا آل راؤنڈرز ایسے ہیں جن کا ماضی کے کھلاڑیوں سے موازنہ کیا جا سکتا ہے ۔بھارتی میڈیا سے گفتگو میں 40 سالہ عبدالرزاق کا کہنا تھا کہ حالیہ برسوں کے دوران کھیل کا معیار تیزی سے زوال کا شکار ہوا ہے اور انہوں نے ماضی میں جس کلاس کے بیٹسمینوں اور باؤلرز کو دیکھا وہ اب موجودہ کرکٹ میں نظر نہیں آتے ۔

سابق آل راؤنڈر کا کہنا تھا کہ کپیل دیو اور عمران خان کی مثال ہی لے لیں کہ وہ ہر دور کے بہترین آل راؤنڈرز کہے جاتے ہیں اور یہ محض ایک مذاق ہی ہے کہ لوگ ہردیک پانڈیا کا موازنہ کپیل دیو سے کرنے کی کوشش کرتے ہیں حالانکہ ہردیک پانڈیا اس معیار سے کہیں دور ہے جو کپیل دیو نے اپنے وقت میں قائم کیا تھا ۔ عبد الرزاق کا کہنا تھا کہ انہوں نے خود بھی بطور آل راؤنڈر پاکستان کیلئے کرکٹ کھیلی مگر اس کا مطلب یہ قطعی نہیں کہ وہ اپنا موازنہ عمران خان سے کرنا شروع کر دیں کیوں کہ عمران خان اور کپیل دیو کا اپنا ایک الگ ہی مقام تھا جس تک رسائی آسان کام نہیں ہے