سعودی عرب: بلدیاتی حکام نے بلیوں کے کھانے کا بہترین انتظام کردیا

ریاض: کرونا وائرس کے لاک ڈاؤن کی وجہ سے تفریحی مقامات لوگوں سے خالی ہے اور مختلف جانوروں جیسے بلیوں اور جانوروں کو کھانے پینے کی اشیا تلاش کرنے میں کافی دشواری کا سامنا ہے، ایسے میں بلدیاتی حکام نے بلیوں کے کھانے کا نہایت بہترین انتظام کردیا۔

سعودی ویب سائٹ کے مطابق الخبر کی بلدیہ نے ساحل پر رہنے والی بلیوں کی خوراک کے لیے خصوصی طور پر ’فیڈنگ پائپس‘ کا بندوبست کر دیا ہے جس میں بلیوں کے لیے خشک خوراک اور ایک بوتل میں پانی رکھا جاتا ہے۔ ساحل کے مختلف مقامات پر 60 عدد فیڈنگ پائپس نصب کیے گئے ہیں
اس سے قبل حرم مکی کے باہر کبوتروں کے لیے دانے کا بندوبست بھی حرمین کے سکیورٹی اہلکاروں کی جانب سے کیا گیا تھا۔

حرمین کے باہر موجود کبوتروں کو وہاں آنے والے لوگ دانہ ڈالتے تھے مگر جب سے کرونا وائرس کی وبا پھیلی اور مکہ میں احتیاطی تدابیر اختیار کرتے ہوئے کرفیو لگایا گیا کبوتروں کے لیے دانے کا انتظام سکیورٹی اہلکاروں نے کرنا شروع کردیا۔

دوسری جانب الخبر کے ساحل پر بلیوں کے لیے فیڈنگ پائپس کے انتظام کے حوالے سے کہا گیا ہے کہ جیسے ہی بلدیہ کے کارکنوں نے بلیوں کے لیے نصب کیے گئے مخصوص پائپوں میں خشک خوراک ڈالی فوراً بڑی تعداد میں بلیاں وہاں پہنچ گئیں اور کھانا کھانے لگیں۔

بلدیہ کے ایک اہلکار کا کہنا تھا کہ اگرچہ یہ ہماری ڈیوٹی نہیں مگر بحیثیت مسلمان ہمارا فرض ہے کہ جانوروں کی خوراک کا بھی خیال رکھیں، خاص کر ان حالات میں جب لوگ کرفیو کی وجہ سے تفریحی مقامات پر نہیں آتے اور جانوروں کو بھوک کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے
بلدیہ کی جانب سے خصوصی طور پر پی وی سی کے پائپس تیار کیے گئے ہیں جن میں بلیوں کےلیے خشک خوراک ڈالی جاتی ہے، پائپ کے اوپری سرے کو مخصوص طریقے سے بند کر دیا جاتا تاکہ پانی یا کوئی اور چیز خوراک میں شامل نہ ہو اور بلیوں کو بھی کھانا آسانی سے میسر ہو سکے۔

فیڈنگ پائپس کے ساتھ ہی پانی کا بڑا کین رکھا گیا ہے جس میں مخصوص انداز میں ڈرین کرنے کے لیے نیچے پلیٹ لگائی گئی ہے جس میں ضرورت کے مطابق پانی نیچے آجاتا ہے اور بلیاں سیراب ہو کر اپنی پیاس بجھا لیتی ہیں