پی آئی اے کو تاریخ میں پہلی بار امریکہ کیلئے براہ راست پروازیں چلانے کی اجازت مل گئی

پی آئی اے کو تاریخ میں پہلی بار امریکہ کیلئے براہ راست پروازیں چلانے کی اجازت مل گئی ، تفصیلات کے مطابق گزشتہ ہفتے سی ای او پی آئی اے کی جانب سے امریکی محکمہ ٹرانسپورٹ کو باضابطہ درخواست دی گئی جس کے بعد براہ راست پروازیں چلانے کی منطوری دے دی گئی۔ امریکہ محکمہ ٹرانسپورٹ کی جانب سے جاری کردہ مراسلہ میں کہا گیا ہے کہ پی آئی اے ایک ماہ کے دوران ایک درجن پروازیں چلا سکتا ہے۔
اس سے قبل قومی ایئر لائن کی پروازوں کو براہ راست امریکہ جانے کی اجازت نہیں تھی، پروازیں برطانیہ سمیت دیگر یورپی ممالک سے سیکورٹی کلئیرنس کے بعد امریکہ کیلئے روانہ ہوتی تھیں، ترجمان پی آئی اے کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ پروازوں کی اجازت ملنا سیکیورٹی صورتحال میں بہتری کیلئے اقدامات کی عکاس ہے۔
بتایا گیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے ذاتی طور پر امریکہ کے لئے براہ راست پروازیں چلانے اورووہان میں پھنسے پاکستانیوں کو جلد ازجلد واپس لانے کے لئے اقدامات کئے۔

سی ای او پی آئی اے نے کہا کہ پاکستان امریکہ کیلئے ریلیف پروازیں چلائے گا، دیار خیر میں دم توڑنے والوں کو بھی بلا معاوضہ واپس لایا جائے گا، پی آئی اے کا آپریشن پاکستانیوں کی وطن واپسی تک جاری رہے گا۔ اس سے قبل پی آئی اے نے مختلف ممالک سے پاکستان آنے کے منتظر افراد کو وطن پہنچانے کا پلان مرتب کیا ہے ،ریلیف آپریشن میں 30 اپریل سے 3 مئی تک مجموعی طور پر 26 پروازیں ہونگی ،30 اپریل کو پی آئی اے کی پہلی پرواز لاہور سے مانچسٹر اور مانچسٹر سے لاہور آئے گی،اسلام آباد سے پی کے 701 مانچسٹر اور مانچسٹر سے جدہ ہوتی ہوئی اسلام آباد پہنچے گی۔ حکام کے مطابق اسلام آباد سے ٹورنٹو کے لئے پی کے 798 جبکہ ٹورنٹو سے 782 فیری فلائٹ لاہور لینڈ کرے گی۔