عمران خان اور پاکستان کی جیت۔ مودی اور را کی شکست۔ امریکہ نےپاکستان زندہ باد کا نعرہ لگا دیا ۔

انڈین آرمی اور انڈین اسٹیبلشمنٹ کا انتہائی خطرناک شرمناک منصوبہ بے نقاب ہوگیا پاک فوج کے ذریعے حکومت پاکستان نے دوست ملکوں کو بھارتی فوج اور بھارتی اسٹیبلشمنٹ کے مستقبل کے انتہائی گھناؤنے منصوبے سے آگاہ کیا تھا جس کے انتہائی مثبت نتائج سامنے آگئے ہیں امریکا سے پاکستان کے لیے بہت اچھی خبر آئی ہے جبکہ بھارت اور مودی سرکار کو پوری دنیا کے سامنے ایک مرتبہ کے شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا ہے ۔
امریکہ سے آنے والی تازہ ترین خبر جو پاکستان کے لیے انتہائی اطمینان بخش ہے اس کے حوالے سے پاکستان کے سینئر صحافی اور تجزیہ نگار صابرشاہ کننے تفصیلات بیان کی ہیں ۔

صابر شاکر نے بھارتی منصوبے کے بارے میں تفصیلات بیان کرنے سے پہلے یہ بھی بتا دیا ہے کہ کرونا کے حوالے سے ان کا جو ٹیسٹ کیا گیا تھا اس کا رزلٹ نیگیٹیو آگیا ہے اور اللہ کا بڑا شکر ہے دوستوں نے بزرگوں نے بہت دعائیں کی تھیں سب کا ممنون ہوں اےآروائی کے دفتر میں مزید 45 لوگوں کے ٹیسٹ ہوئے تھے پہلے 21 لوگوں کے ٹیسٹ ہوئے تھے اور جن دوستوں کے ٹیسٹ پازیٹو آئے ہیں اب وہ خصوصی نگہداشت میں ہیں لیکن ظاہر ہے کہ وہ کیا کچھ سوچ رہے ہیں ان کو اپنی فیملی اور بچوں کی زیادہ فکر ہے اللہ تعالی ان سب کو صحت اور تندرستی عطا فرمائے ۔صابر شاکر نے کہا کہ پچھلے اڑتالیس گھنٹے میں میں بھی کافی کچھ سوچتا رہا ہوں لیکن یہ تفصیلات پھر کسی وقت بتاؤں گا ۔

امریکہ سے آنے والی اچھی خبر کے حوالے سے بات کرتے ہوئے صابر شاکر نے کہا کہ کافی عرصے سے یہ بات ہو رہی تھی کہ مودی سرکار یہ کر رہی ہے مودی یہ کر رہا ہے مودی ہو کر رہا ہے لیکن مجھے پہلے سے ہی اندازہ تھا کہ یہ مودی دراصل ایک پتلی تماشہ ہے ایک کٹھ پتلی ہے اصل میں انڈین اسٹیبلشمنٹ بھی اسی طرح کام کرتی ہے جس طرح امریکہ اور دیگر ملکوں کی اسٹیبلشمنٹ ۔یہ بات سمجھنے کی ضرورت ہے کہ دنیا میں عسائیوں کی تو بہت سی ریاستیں ہیں مسلمانوں کی بھی بہت سی ریاستیں ہیں لیکن یہودیوں کی صرف ایک ریاست ہے اسرائیل اور ہندوؤں کا صرف ایک ملک ہے بھارت ۔بھارت بہت سوچ سمجھ کر بابری مسجد کو شہید کرچکا ہے اور سکھوں کے گولڈن ٹیمپل پر بھی اٹیک کیا جا چکا ہے مقبوضہ کشمیر میں لاک ڈاؤن کے دوران سینکڑوں کشمیری شہید کیے گئے ہیں اگرچہ وہاں سے خبروں کو چھپایا جا رہا ہے لیکن پھر بھی یہی اطلاعات موصول ہو رہی ہیں ۔بھارت نے جو نیشنلٹی کا نیا قانون سٹیزن شپ کے قانون کی صورت میں پیش کیا اور اس کے اہم کاغذات پاکستان کو ملے تو ان کی تفصیلات دوست ملکوں کے ساتھ شئیر کی گئی لائن یہ تھا کہ ہندوستان کو صرف ہندوؤں کا ملک بنایا جائے باقی اقلیتوں کو فارغ کردیا جائے ۔انڈین آرمی اور انڈین اسٹیبلشمنٹ میں نیا انڈکشن نہیں ہوگا مسلمانوں سکھوں عیسائیوں دلت سمیت تمام اقلیتوں کو فارغ کیا جائے گا یہ چیزیں جب دہلی کے سفارتخانوں سے دنیا کے مختلف کونوں میں پہنچی اور اپنے اپنے ملکوں کو گئی ہوئی تو اس پر دنیا کی آنکھیں کھلی ہیں اور 2020 کے حوالے سے مذہبی آزادی پر امریکی رپورٹ سامنے آگئی ہے جس میں بھارت کو اقلیتوں کے لیے دنیا کا خطرناک ترین ملک قرار دیا گیا ہے ۔
امریکی کمیشن برائے مذہبی آزادی کی آنکھیں کھل گئیں ہیں مختلف عیسائی ریاستوں اور مسلمان رہ سکتا ہوں نے سال 2019 میں جو رپورٹیں دہلی سے اپنے ملکوں میں بھیجیں ان کے نتیجے میں بھارت مذہبی آزادی کے حوالے سے دنیا میں بہت نیچے آگیا ہے تازہ رپورٹ کے مطابق سال 2019 میں اقلیتوں پر سب سے زیادہ حملے بھارت میں ہوئے ہیں امریکی کمیشن نے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کے خاتمے پر بھی گہری اور سخت تشویش کا اظہار کر دیا ہے صاف نظر آ رہا ہے کہ بھارت کہتا ہے وہ صرف ہندوؤں کے لئے اس ملک کو رہنا چاہتا ہے باقی سب کا صفایا کرنا چاہتا ہے ۔
رپورٹ میں پاکستان کے اقدامات کی تعریف کی گئی ہے کرتارپور کھولنے کی تعریف کی گئی ہے سکھ یونیورسٹی کے قیام کی تعریف کی گئی ہے اور اقلیتوں کے حقوق کے حوالے سے سپریم کورٹ کے فیصلوں کو سراہا گیا ہے کہ پاکستانی عدالتوں نے مذہب رنگ اور نسل کو نہیں دیکھا بلکہ میرٹ پر فیصلے کیے ہیں ۔
آخر میں صابر شاکر نے کہا کہ حکومت پاکستان نے وزیراعظم عمران خان اور جنرل باجوہ نے جوبیان یہ دنیا کے سامنے پیش کرنا شروع کیا اقوام متحدہ سے شروع کیا گیا تھا یہ سفر جہاں وزیراعظم نے خطاب کیا تھا اب اس کے مثبت اور حوصلہ افزا نتائج بنیا کے سامنے آگئے ہیں یہ پاکستان کے لیے انتہائی اطمینان بخش اور خوش آئی خبر ہے جبکہ بھارت کے لئے شرمناک اور مودی سرکار اور راکی شکست ہے ۔