ناجائز منافع خوری پر صوبے بھر کے 8 سو سے زائد گراں فروشوں اور دکانداروں پر 16 لاکھ 5 سو روپے سے زائد کا چلان کیا گیا، ڈاکٹر کھٹو مل جیون

صوبے میں اشیاء ضرورت کی کمی نہیں, رمضان شریف کی آڑ میں ناجائز منافع کمانے نہ دیا جائے۔ معاون خصوصی کی ہدایت
کراچی  :  وزیر اعلیٰ سندھ کے معاون خصوصی ڈاکٹر کھٹومل جیون کی ہدایت پر ماہ رمضان کے آغاز سے بیورو آف سپلائی اینڈ پرائسیز کے افسران نے ضلعی انتظامیہ کے ساتھ مل کر صوبے بھر میں منافع خوروں اورذخیرہ اندوزوں کے خلاف کریک ڈاؤن شروع کردیا۔ یہ بات انہوں نے اپنے جاری بیان میں کہی۔ ڈاکٹر کھٹومل جیون نے کہا کہ صوبے میں اشیاء ضرورت کی کمی نہیں, رمضان شریف کی آڑ میں ناجائز منافع کمانےنہیں دیا جائیگا۔ انہوں نے مزید کہا کہ بیورو آف سپلائی اینڈ پرائسیز کے افسران نے پرائس میجسٹریٹز کے ساتھ مل کر صوبے کے مختلف اضلاع میں کارروائی کرتے ہوئے چھاپے مارے۔

تفصیلات کے مطابق رمضان شریف کے آغاز سے ابتک صوبے بھر میں 4 ہزار سے زائد دوکانوں, پھل و سبزیاں فروشوں اور دیگر اشیاء خوردونوش فروخت کرنے والوں کی چیکنگ کرتے ہوئے سرکاری پرائس لیسٹ کی عدم موجودگی اور ناجائز منافع خوری پر صوبے بھر کے 8سو سے زائد گراں فروشوں اور دکانداروں پر 16لاکھ 5سو روپے سے زائد کا چلان کیاگیا۔ کراچی ڈویژن میں 195 منافع خوروں پر 12 لاکھ روپے سے زائد کا جرمانہ عائد کیا گیا جبکہ صوبے کے دیگر اضلاع میں 6سو سے زائد منافع خوروں پر بھی 4 لاکھ روپے سے زائد کا جرمانہ عائد کیا گیا۔ ڈاکٹر کھٹومل جیون نے کہا کہ ناجائز منافع خوروں کو کسی صورت معاف نہیں کیا جائے گا۔ جبکہ ذخیرہ اندوزوں اور غیر معیاری اشیاء فروخت کرنے والوں کی گرفتار بھی عمل میں لائی جائے گی۔