ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کی چھٹی آپ اپنے دام میں صیاد آگیا ۔ایسے نکال دیا گیا جیسے مکھن میں سے بال

وزیراعظم عمران خان کی جانب سے ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کی چھٹی ۔اس اہم فیصلے کے بعد سیاسی مبصرین ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان پر لگنے والے الزامات پر بحث کر رہے ہیں ۔کہاجارہاہےکہ کتنی ستم ظریفی ہے کل تک ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان بیان دے رہی تھی کہ اپوزیشن کے لوگوں کی چھٹی ہونے والی ہے نیب کے مقدمات اور گرفتاریوں کے حوالے سے باتیں ہو رہی تھی

اور اب خود ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کی چھٹی ہو چکی ہے انہیں خود کرپشن کے الزامات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اور جو چند لوگوں کو سب سے زیادہ پرموٹ کرتا تھا وہی چینل ان کے دور کی کرپشن کے حوالے سے خبریں دے رہا ہے جن صحافیوں کو وہ ہر وقت خوش رکھنے کے لیے کوششیں کرتی نظر آتی تھیں وہیں اب بتا رہے ہیں کہ ان کے پاس نو ورکر تھے اتنے نوکر تھے اتنی گاڑیاں تھیں آؤٹ آف بجٹ کام ہو رہے تھے وغیرہ وغیرہ ۔

اس حوالے سے سینئر صحافی اور تجزیہ نگار سید طلعت حسین نے تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ وقت بدل جاتا ہے کل تک ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان جنہیں بنی گالہ کے ان مقامات تک کی رسائی بھی حاصل تھی یہاں کوئی اور نہیں جا سکتا تھا آج وہاں سے نکال دی گئی ہیں جیسے مکھن میں سے بال ۔اور ان پر الزامات بھی ایسے لگ رہے ہیں جو اپوزیشن کے لوگوں پر لگتے تھے سوال ضرور اٹھ رہا ہے کہ وزیراعظم کے ناک کے نیچے ایسے لوگ کیسے کیسے کام کر جاتے ہیں جو بقول ان کے ٹھیک نہیں ہیں اور وزیراعظم کے دائیں بائیں بیٹھنے والے لوگوں کے خلاف شکایات آرہی ہیں آخر وزیر اعظم کا وہ نظام عدل کہا گیا جس نے ان سب چیزوں پر چیک رکھنا تھا سر حسین کا کہنا ہے کہ عاصم باجوا کو لے کر آئے ہیں یہ بہت اہم فیصلہ ہے انہوں نے جنرل مشرف اور جنرل کیانی کے ساتھ بہت قریب رہ کر کام کیا آئی ایس پی آر کا رول بڑھایا قد بڑھایا ٹویٹ کرنے کا رجحان دیا جنرل راحیل شریف کی مقبولیت کو آسمان پر پہنچایا عمران خان سے بھی زیادہ پاپولر بنا دیا تھا پھر سدرن کمانڈ کو سنبھالا انتخابات کرائے ریٹائرمنٹ کے بعد سی پیک اتھارٹی کے سربراہ بن گئے اب ان کو وزارت لازمی ان ذمہ داری دی گئی ہے بظاہر وہ بیک سیٹ پر کھیلنے والے نہیں ہیں بلکہ فرنٹ فٹ پر کھیلنے کے عادی ہیں نہ تو وہ صمصام بخاری ہیں نہ چن ذیب ہیں نہ وہ ہوا چوہدری ہیں نہ عاشق عوان ہے نہ دورانی صاحب کی طرح ہے ۔وہ بھرپور انداز سے کام کریں گے اور ان کا ایکسپوژر بہت زیادہ ہے بظاہر کہا جا رہا ہے کہ وہ لوگ پروفائل رہ کر کام کریں گے اگر ایسا ہوا تو یہ حیران کن بات ہوگی طلعت حسین نے سوال اٹھایا کہ فوج اور فوجی کیا کیا کرے ؟