چار سال میں گریڈ 14 سے گریڈ 18 میں پہنچنے والے افسر کی حیران کن کہانی

یہ کہانی ہے ایک ایسے افسر کی جس نے سندھ گورنمنٹ میں چور دروازے سے ترقی حاصل کرنے کا سفر تیزی سے طے کیا اور سب کی آنکھوں میں دھول جھونکتے ہوئے اپنا الو سیدھا کرتا چلا گیا اس سفر میں اسے حکومت سندھ کی کالی بھیڑوں کی بھرپور مدد اور کرپٹ شخصیات کی آشیرباد حاصل رہی ۔

اس افسر کے بعد کمال ترقی کے سفر کی کہانی اس کے خلاف جمع کرائی گئی ایک درخواست کے ذریعے سامنے آئی جس میں درخواست گزار نے اس کی گریٹ 14 سے 18 تک کی ترقی کے سفر کی روداد بیان کی اور مختلف سرکاری لیٹرز اور نوٹیفیکیشن کا حوالہ دیتے ہوئے عدالتی احکامات کی کھلی خلاف ورزی اور توہین عدالت کے مرتکب ہونے کے معاملے کو اٹھایا ہے ۔
اس افسر کے خلاف آنے والی درخواست تمہیں درخواست گزار لکھتاہے کہ
خدمت جناب ڈائریکٹر جنرل سہون ڈویلپمنٹ اتھارٹی جامشورو
جناب عالی گزارش یہ ہے کہ آپکے ایک ملازم آغا زبیر پٹھان ولد نادرعلی پٹھان سہون ڈویلپمنٹ اتھارٹی میں کمپیوٹر آپریٹر کی حیثیت سے کام کرتے تھے وہ گریڈ 14 میں ملیر ڈویلپمنٹ اتھارٹی میں عارضی منتقل ہو کر لوکل گورنمنٹ ڈیپارٹمنٹ سندھ کے ایک آرڈر جسکا نمبر
SO ( G ) HTP / GEN / 4- 242 / 12 dated 15/ 03/
2012 تھا داخل ہوئے ( کاپی منسلک کر رہا ہوں) اور بحثیت کمپیوٹر آپریٹر کے کام کرتے رہے اور 4 سال بعد اچانک 2016 میں گریڈ 17 ہوگیا اسکے بعد غیر قانونی طور پر 18 گریڈ پر بحیثیت ڈپٹی ڈائریکٹر لینڈ پوسٹنگ کرا لی 2012 میں آئے موٹر سائیکل پہ تھے اور اب ماشاء اللہ موصوف کے پاس برینڈ نیو کیلنڈر ماڈل کاریں ہیں ملیر ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے اسکیم کے پرمینینٹ ملازمین کی حق تلفی ہوتی رہی اسکے بعد عزت مآب سپریم کورٹ آف پاکستان کے ایک فیصلے 2016 / 6k میں مورخہ یکم اگست 2016 کو آیا
اس فیصلے کے نتیجے میں تمام غیر قانونی افسران و ملازمین کو انکے اپنے پیرینٹ ڈیپارٹمنٹ میں relieved /repatriated ہونے کے آرڈر ہوے تھے (جس کی کاپی منسلک کر رہا ہوں ) کی تعمیل کرتے ہوئے سیکریٹری ملیر ڈویلپمنٹ اتھارٹی نے ایک لیٹر 1250/ 2016 / MDA / بتاریخ 05 اگست 2016 کو جاری کیا جس میں آغا زبیر پٹھان کا نام ٹیبل D میں سیریل نمبر 46 پر ہے ( کاپی منسلک کر رہا ہوں)
اس کے بعد لوکل گورنمنٹ ڈیپارٹمنٹ نے ایک نوٹیفکیشن 21 ستمبر 2016 کو جاری کیا ( کاپی منسلک کر رہا ہوں) جس میں اغا زبیر پٹھان کو واپس اس کے اپنے پیرنٹ ڈیپارٹمنٹ یعنی سہیون ڈیولپمنٹ اتھارٹی میں repatriate ,کیا گیا اور آغا زبیر پٹھان کے پیرینٹ ڈیپارٹمنٹ یعنی سہیون ڈیولپمنٹ اتھارٹی میں جوائن کرنے کا حکم دیا گیا لیکن آغا زبیر پٹھان ابھی تک ملیر ڈویلپمنٹ اتھارٹی ٹی میں چپکے ہوے ہیں اور مستقل توہین عدالت کے مرتکب ہو رہے ہیں اس معاملے میں میری آپ سے مودبانہ گزارش ہے کہ محکمانہ کارروائی کر کے قانون کی پاس داری کرتے ہوئے آغا زبیر پٹھان کو سہیون ڈویلپمنٹ اتھارٹی میں
فوری طور پر بلایا جائے عین نوازش ہوگی میں قانونی طریقہ اپناتے ہوئے آغا زبیر پٹھان کے خلاف سندھ ہائی کورٹ میں بھی جاؤنگا آپسے گزارش ہے کہ قانونی معاملات سے بچنے کے لئے میری درخواست پر ہمدردانہ غور کیا جائے عین نوازش ہوگی
فقط مظلوم طاہر محی الدین کونٹریکٹ ایمپلائی ملیر ڈویلپمنٹ اتھارٹی
پتہ! 1301 /2 شافیصل کالونی بلاک 2 کراچی
موبائل نمبر 03212874355