ڈائریکٹر سندھ بلڈنگ کنٹرول بھی بااثر منظور قادر کاکا کے دور میں سیٹ اپ چلانے والے افسران کے نرغے میں آگئے۔۔۔

کراچی :  منظور قادر کاکا کے دوست کے پینٹ ہاؤسز پر ہونے والی انہدامی کاروائی ادھوری رہ گئی۔ذرائع کے مطابق منگل 21 اپریل کو ایس بی سے اے کا ڈیمولیشن اسکواڈ شہید ملت روڈ پر واقع ماڈرن سوسائٹی کے پلاٹ نمبر 4 پر تعمیر کی گئی 19 منزلہ عمارت پر پہنچا جہاں اسکواڈ کو اعلیٰ افسر کی ہدایت پر انہدامی کارروائی ادھوری چھوڑ کر واپس آنا پڑ گیا۔ایس بی سی اے کے قریبی ذرائع کا دعویٰ ہے کہ عمارت منظور قادر کاکا کے قریبی دوست حنیف کاٹیلا نے تعمیر کی ہے اور عمارت کی چھت پر دو بیش قیمت پینٹ ہاؤسز بھی غیر قانونی طور پرتعمیر کیے گئے۔

ذرائع کے مطابق پینٹ ہاؤسز کی کمپلینٹ کاکا دور میں ملازمت سے مستعفی ہونے والے ڈائریکٹر ساجد محمود نے کرائی تھی۔ کیونکہ ساجد محمود کو منظور قادر کاکا نے کاٹیلا کی ہی ایک اور عمارت پر انہدامی کاروائی پر معطل کرکے انکوائری شروع کی تھی مگر ساجد نے انکوائری سے قبل ہی نوکری چھوڑ دی تھی۔ذرائع کے مطابق پینٹ ہاؤسز پر ڈیمولیشن اسکواڈ نے جیسے ہی توڑ پھوڑ شروع کی کاٹیلا نے فوری کاکا کے منظور نظر ڈائریکٹر علی مہدی کاظمی اور دیگر افسران کو فون کرنا شروع کئے جسکے بعد کچھ ہی دیر میں ڈائریکٹر جنرل نسیم الغنی سہیتو کی مبینہ مداخلت پر ڈیمولیشن اسکواڈ کاروائی ادھوری چھوڑ کر واپس لوٹ گیا۔ زرائع کا کہنا ہے کہ ادھوری کارروائی پر شکایت کنندہ ساجد محمود نے مختلف اداروں سے رابطہ کرکے صورتحال سے آگاہ کردیا ہے۔