جے یو آئی ف کے رہنما قاتلانہ حملے میں جاں بحق

جے یوآئی ف کے ضلعی رہنما مولانا عبداللہ قاتلانہ حملے میں جاں بحق ہوگئے۔تفصیلات کے مطابق نوشہرہ کی آرمرر کالونی میں افسوسناک واقعہ پیش آیا ہے جہاں نامعلوم افراد نے ضلعی رہنما مولانا عبداللہ پر فائرنگ کردی ،مولانا عبداللہ مسجد سے گھر جا رہے تھے کہ نامعلوم موٹرسائیکل سواروں نے فائرنگ کردی۔

مولانا عبداللہ پر فائرنگ رنگ اس وقت کی گئی جب وہ مغرب کی نماز ادا کرکے گھر جارہے تھے۔مولانا عبداللہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جاں بحق ہوگئے ۔پولیس کے مطابق ملزمان پہلے سے تاک میں بیٹھے تھے۔اور پھر مولانا عبداللہ کو اندھا دھند فائرنگ کرکے گولیوں سے چھلنی کر دیا۔ملزمان فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔ علاقے کو سیل کردیا گیا اور ملزمان کی گرفتاری کے لیے کاروائی کا آغاز کر دیا گیا ہے۔

مولانا عبداللہ جے یو آئی ف کے امیر بھی رہ چکے ہیں۔مولاناعبداللہ مقامی مدرسے کے استاد بھی تھے۔جمیعت علماء اسلام ف ضلع نوشہرہ کے جنرل سیکرٹری مفتی حاکم علی نے واقعے کی تصدیق کرتے ہوئے ٹارگٹ کلنگ قرار دے دیا۔پولیس نےجاں بحق مولانا عبداللہ کی لاش قاضی کمپلیکس منتقل کردی۔اطلاع ملنے پر جمیعت علماء اسلام کے کارکنوں نے قاضی کمپلیکس کے باہر احتجاج شروع کر دیا۔
کسی بھی ناخوشگوار واقعے سے نمٹنے کے لیے پولیس کی مزید نفری بلائی گئی۔ اس سے قبل سکھر میں بھی ایسا واقع پیش آ چکا ہے جہاں جے یو آئی ف کے رہنما ڈاکٹر خالد کو فجر کی نماز پڑھتے ہوئے قتل کر دیا گیا تھا۔ اس واقع میں صبح فجر کی نماز کے دوران 2 افراد مسجد میں داخل ہوئے تھے اور انہوں نے ڈاکٹر خالد پر فائرنگ کرکے انہیں موقع پرجاں بحق کر دیا تھا۔
اب ایسا ہی ایک اور واقع پیش آیا ہے جس میں نوشہرہ کی آرمرر کالونی نامعلوم افراد نے ضلعی رہنما مولانا عبداللہ پر فائرنگ کردی ،مولانا عبداللہ مسجد سے گھر جا رہے تھے کہ نامعلوم موٹرسائیکل سواروں نے فائرنگ کردی۔مولانا عبداللہ پر فائرنگ رنگ اس وقت کی گئی جب وہ مغرب کی نماز ادا کرکے گھر جارہے تھے۔مولانا عبداللہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جاں بحق ہوگئ

urdupoint-report