اسکینڈل رپورٹ،پاورکمپنیوں کے مالکان 3وزراء کابینہ سے چلے گئے

وفاقی کابینہ اجلاس کی اندرونی کہانی سامنے آ گئی ہے ۔ ذ رائع کے مطا بق جب کابینہ میں پاور اسکینڈل کی رپورٹ پیش کی گئی تو کابینہ کے تین ممبران اجلاس سے چلے گئے جن کی پاور کمپنیاں ہیں ۔ ذ رائع کے مطا بق وزیراعظم عمران خان نے پاور سیکنڈل انکوائری رپورٹ میں ذکر کے دوران کابینہ ارکان کا دفاع کیا۔ ذرائع کے مطابق وزیر اعظم نےوزراء کو ندیم بابر،خسرو بختیار،عبد الرزاق داؤد کا دفاع کرنے کی ہدایت کردی ۔ ذرائع کے مطابق وزیراعظم نے کہا کہ ندیم بابر،خسرو بختیار،عبد الرزاق داؤد ایماندار اور قابل ہیں،تینوں ارکان کی ایمانداری پر کوئی شک نہیں،امید ہے تینوں وزراء انکوائری کمیشن سے کلیئر ہونگے۔ وزیراعظم کا مزید کہنا تھا کہ آئی پی پیز کے معاہدے سابقہ حکومتوں نے کئے،سابقہ ادوار میں آئی پی پیز کے ساتھ غلط معاہدوں کیوجہ سے عوام کو بجلی مہنگی مل رہی ہے۔ وزیر اعظم نے تینوں ارکان سے متعلق ان کی عدم موجودگی میں یہ ریمارکس د یے۔ ان وزراء کی نجی پاور کمپنیوں میں اور ئینٹ ، صبا پاور ، روش اور رحیم یار خان پاور پلانٹ ہیں جو ان کمپنیوں میں شامل ہیں جن کے بارے میں انکوائری رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ انہوں نے ز یادہ منافع کمایا۔