کورونا: کراچی سمیت پاکستان میں سیکڑوں اموات کا خدشہ

لمحہ با لمحہقومی خبریںبین الاقوامی خبریںتجارتی خبریںکھیلوں کی خبریںانٹرٹینمنٹصحتدلچسپ و عجیبخاص رپورٹ

کورونا: کراچی سمیت پاکستان میں سینکڑوں اموات کا خدشہ
پاکستان سمیت برطانیہ اور سعودی عرب کے نامور مسلمان ماہرینِ صحت نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ اگر رمضان میں باجماعت نمازیں اور تراویح پڑھانے پر اصرار جاری رکھا گیا تو پاکستان میں کورونا وائرس سے سیکڑوں اموات ہو سکتی ہیں۔

ان خدشات کا اظہار سعودی عرب، برطانیہ اور پاکستان کے نامور ماہرینِ صحت مکہ مکرمہ سے ڈاکٹر مغیث، مدینہ منورہ سے ڈاکٹر فرید شاہ، لندن سے ڈاکٹر خرم خان، کراچی سے ڈاکٹر عبدالباری خان، ڈاکٹر فیصل محمود، ڈاکٹر شیمویل اشرف، ڈاکٹر سعد خالد نیاز، ڈاکٹر عبدالباسط، ڈاکٹر حنیف چٹنی، ڈاکٹر زاہد جمال، ڈاکٹر یحییٰ چاؤلہ، ڈاکٹر رضا سید اور میر پور خاص سے ڈاکٹر رضی محمدنے پاکستانی علماء، حکومتِ پاکستان اور ملک کی تاجر برادری کو منگل کے روز لکھے گئے ایک خط میں کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ مساجد میں نماز پڑھنے والے زیادہ تر افراد کی عمریں 50 سال سے زائد ہوتی ہیں جو کہ کورونا وائرس کے حملے کا سب سے آسان شکار ہوسکتے ہیں، رمضان میں باجماعت نماز اور تراویح کے اجتماعات کے نتیجے میں پاکستان کے کمزور نظام صحت پر ایسا دباؤ پڑ سکتا ہے کہ وہ بالکل ہی بیٹھ جائے۔

نامور مسلمان ماہرینِ صحت کا کہنا ہے کہ مساجد میں باجماعت نمازوں کے نتیجے میں کرونا وائرس پھیلنے اور غیرمعمولی اموات کی وجہ سے نہ صرف پاکستان بلکہ اسلام اور مسلمانوں کو بھی شدید بدنامی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے، علماء سے گزارش ہے کہ وہ باجماعت نمازوں کے فیصلے پر نظرثانی کریں اور لوگوں کو گھروں پر نماز پڑھنے کی ترغیب دیں۔

Courtesy jang urdu