ملک میں کورونا کے ایک دن میں ریکارڈ 883 کیسز اور 24 اموات

پاکستان میں کورونا وائرس کا پھیلاؤ جاری ہے اور مزید کیسز اور اموات کے بعد اب تک متاثرین کی تعداد 9 ہزار 193 جبکہ اموات 192 تک پہنچ گئیں۔

ملک میں پیر کے روز وبا سے ریکارڈ 21 اموات ہوئیں اور سندھ میں 5، پنجاب میں 3، خیبر پختونخوا میں 14 جبکہ اسلام آباد اور بلوچستان میں ایک، ایک شخص جاں بحق ہوا۔

اگرچہ 26 فروری کو پہلے کیس کے سامنے آنے کے بعد سے 31 مارچ تک اس عالمی وبا کا پھیلاؤ کافی حد تک کم تھا تاہم اپریل کے مہینے میں اس وبا کے کیسز میں دوگنا اضافہ ہوا۔

یکم اپریل سے گزشتہ روز 19 اپریل تک 6 ہزار سے زائد کیسز رپورٹ ہوئے جبکہ 142 افراد اس دوران زندگی کی بازی ہار گئے

اس عالمی وبا کو روکنے کے لیے جہاں ملک کے مختلف حصوں میں پابندیاں اور لاک ڈاؤن نافذ ہے تاہم روز بروز کیسز کی تعداد میں اضافہ ہورہا ہے۔

آج (20 اپریل) کو بھی ملک میں کورونا وائرس کے مزید کیسز اور اموات رپورٹ ہوئیں۔

سندھ
سندھ میں کورونا وائرس کے مزید 227 کیسز اور 5 اموات سامنے آگئیں۔

وزیر صحت سندھ کی میڈیا کوآرڈینیٹر میران یوسف نے کہا کہ صوبے میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد بڑھ کر 2762 ہوگئی ہے۔

انہوں نے سندھ میں وائرس سے مزید 5 اموات کی بھی تصدیق کی جس کے بعد جاں بحق افراد کی تعداد 61 ہوگئی۔

میڈیا کوآرڈینیٹر کا کہنا تھا کہ 635 افراد کورونا سے صحتیاب بھی ہوچکے ہیں۔

بعد ازاں وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے مزید 2 کیسز کی تصدیق کی جس کے بعد صوبے میں متاثرین کی تعداد 2764 ہوگئی۔

پنجاب
وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے ایک ہی روز میں کورونا کے 474 نئے مریض سامنے آنے کی تصدیق کی جس کے بعد یہاں متاثرہ افراد کی تعداد 4195 ہوگئی۔

انہوں نے کہا کہ تبلیغی جماعت سے منسلک افراد میں 1857، زائرین میں 743، قیدیوں میں 97 اور عام شہریوں میں 1498 کیسز سامنے آئے ہیں۔

وزیر اعلیٰ نے مزید 3 مریضوں کے جاں بحق ہونے کے بھی تصدیق کی جس کے بعد صوبے میں اموات 45 ہوگئی ہیں

خیبرپختونخوا
صبح کے اوقات میں خیبرپختونخوا کے اعداد و شمار سامنے آئے اور مزید 98 کیسز اور 7 اموات ریکارڈ کی گئیں۔

خیبرپختونخوا کے محکمہ صحت کی جاری کردہ رپورٹ میں بتایا گیا کہ صوبے میں 98 کیسز رپورٹ ہوئے جس میں 58 کیسز صوبوں سے آئے جبکہ 40 کیسز ایسے تھے جو دیگر مقامات سے آئے لوگوں میں ہوئے۔

رپورٹ کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران صوبے میں مزید 7 افراد زندگی کی بازی ہار گئے۔

رات گئے وزیر صحت خیبر پختونخوا تیمور خان جھگڑا نے کورونا کے مزید 39 کیسز کی تصدیق کی جس کے بعد متاثرہ افراد کی تعداد 1276 ہوگئی۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹوئٹ میں انہوں نے کہا کہ کورونا سے سب سے زیادہ متاثرہ علاقے پشاور اور مالاکنڈ ڈویژنز ہیں جہاں آج 39 میں سے 33 کیسز سامنے آئے ہیں۔

صوبائی وزیر نے مزید 7 اموات کی بھی تصدیق کی جس کے بعد خیبر پختونخوا میں جاں بحق مریضوں کی تعداد 74 ہوگئی

بلوچستان
بلوچستان حکومت کے ترجمان لیاقت شاہوانی نے صوبے میں کورونا وائرس کے مزید 33 کیسز کی تصدیق کی، جس کے بعد متاثرین کی تعداد 465 ہوگئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ مقامی سطح پر کورونا سے متاثرہ افراد کی تعداد میں تیزی سے اضافہ تشویشناک ہے

رات گئے وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال نے ایک مریض کے جاں بحق ہونے کی تصدیق کی جس کے بعد صوبے میں اموات کی تعداد 6 ہوگئی

اسلام آباد
ادھر وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں کورونا وائرس سے مزید 10 افراد متاثر ہوئے جبکہ ایک موت کی بھی تصدیق ہوئی۔

سرکاری سطح پر اعداد و شمار بتانے والی ویب سائٹ کے مطابق اسلام آباد میں 10 نئے کیسز سامنے آنے سے متاثرین کی تعداد 181 تک پہنچ گئی۔

گلگت بلتستان
اسی طرح گلگت بلتستان میں مزید 6 کیسز رپورٹ ہوئے۔

مذکورہ علاقے میں سامنے آنے والے ان 6 نئے کیسز کے بعد وہاں متاثرین کی تعداد 257 سے بڑھ کر 263 ہوگئی۔

آزاد کشمیر
مزید برآں اس وائرس سے سب سے کم متاثر آزاد کشمیر میں بھی ایک اور کیس رپورٹ ہوا۔

جس کے بعد آزاد کشمیر میں کورونا مریضوں کی تعداد 48 سے بڑھ کر 49 ہوگئی ہے۔

صحتیاب
علاوہ ازیں ملک میں صحتیاب افراد کی تعداد تیزی سے بڑھ رہی ہے جو ان مریضوں کے لیے امید کی کرن ہے جو اس وقت وائرس کا شکار ہیں۔

سرکاری ڈیٹا کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک میں مزید 102 افراد ایسے تھے جنہوں نے اس وائرس کو شکست دے دی۔

صحتیاب ہونے والے ان افراد کے بعد ملک میں مجموعی طور پر شفایاب افراد کی تعداد 1970 تک پہنچ چکی ہے۔

ان نئے اعداد و شمار کے بعد صوبوں اور علاقوں میں آنے والے کیسز کی تعداد کچھ اسطرح ہوگئی ہے۔

پنجاب 4195 کیسز، سندھ 2764، خیبرپختونخوا 1276، بلوچستان 465، اسلام آباد 181، گلگت بلتستان 263 اور آزاد کشمیر میں 49 کیسز ہیں۔

اموات پر اگر نظر ڈالیں تو سب سے زیادہ خیبرپختونخوا میں اموات رپورٹ ہوئی ہیں۔

خیبرپختونخوا: 74
سندھ: 61
پنجاب: 45
بلوچستان: 6
گلگت بلتستان: 3
اسلام آباد: 3
آزاد کشمیر کوئی نہیں
dawnnews-report