پاکستان میں کورونا وائرس سے 7476 افراد متاثر، 1765 صحتیاب

دنیا بھر میں لاکھوں افراد کو متاثر و ہلاک کرنے والے مہلک نوول کورونا وائرس کا پاکستان میں بھی پھیلاؤ بڑھ رہا ہے اور روز نئے کیسز اور اموات سامنے آرہی ہیں۔
آج آنے والے نئے کیسز کے بعد ملک میں متاثرین کی مجموعی تعداد 7 ہزار 476 ہوگئی جبکہ اموات 143 تک پہنچ گئی ہیں۔
گزشتہ 2 روز سے ملک میں اموات کی شرح میں اچانک بہت زیادہ اضافہ دیکھا گیا ہے اور ایک روز میں 17 اموات تک ریکارڈ کی گئی ہیں، جو پاکستان میں کورونا وائرس سے ایک روز مرنے والوں کی ریکارڈ تعداد ہے۔
اسی طرح کیسز میں بھی اضافہ ہوا ہے جس کی ایک وجہ ٹیسٹ میں اضافے کو بھی بتایا جارہا ہے
تاہم اس سب کے باوجود اپریل کا مہینہ پاکستانیوں کے لیے کورونا وائرس کے حساب سے کافی تشویش ناک دیکھا جارہا ہے کیونکہ اس ماہ کے صرف 17 دنوں میں 5 ہزار سے زائد کیسز رپورٹ کیے جاچکے ہیں جبکہ اموات بھی 100 سے زائد ہوئی ہیں۔
یہاں یہ بات مدنظر رہے کہ ملک میں کورونا وائرس کی روک تھام کے لیے مختلف پابندیاں اور جزوی لاک ڈاؤن میں بھی 30 اپریل تک توسیع کی جاچکی ہے۔
جمعہ (17 اپریل کو) سامنے آنے والے کیسز کو دیکھیں تو صبح کے اوقات میں اسلام آباد اور گلگت بلتستان میں مزید کیسز رپورٹ ہوئے، بعد ازاں سندھ، پنجاب میں کیسز اور اموات سامنے آئیں۔
سندھ
سندھ میں جمعہ کو بھی مزید 209 کیسز اور 2 اموات کی تصدیق کی گئی۔
ترجمان سندھ حکومت مرتضیٰ وہاب نے بتایا کہ صوبے میں 21 ہزار 278 افراد کے ٹیسٹ کیے جاچکے ہیں، جس میں مثبت آنے والوں کی تعداد 2 ہزار 217 ہوچکی ہے
انہوں نے بتایا کہ گزشتہ 24 گھنٹوں میں 2 ہزار 372 کیسز کیے گئے جس میں 209 افراد میں وائرس کی تشخیص ہوئی۔ ساتھ ہی انہوں نے بتایا کہ صوبے میں مزید 2ا فراد کے انتقال سے اموات کی تعداد 47 ہوگئی۔
مرتضیٰ وہاب نے بتایا کہ گزشتہ 24 گھنٹوں میں 5 افراد صحتیاب ہوئے جس کے بعد سندھ میں شفایاب افراد کی تعداد 581 تک پہنچ چکی ہے۔
پنجاب
ادھر صوبہ پنجاب میں پہلے کورونا وائرس کے مزید 25 کیسز اور ایک موت کی تصدیق کی گئی۔
ترجمان پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کیئر قیصر آصف نے بتایا کہ صوبے میں کورونا وائرس کے مزید 25 کیسز سے متاثرین کی تعداد 3301 تک پہنچ چکی ہے۔
ان کیسز کی تفصیلات کے بارے میں انہوں نے بتایا کہ 701افراد زائرین سینٹر، 1262 رائے ونڈ سے منسلک افراد، 1247 عام شہری اور 91 قیدی موجود ہیں۔
ترجمان کے مطابق صوبے میں مزید ایک افراد انتقال بھی کرگیا جس کے بعد وہاں اموات کی تعداد 36 ہوگئی ہے۔
بعد ازاں انہوں نے صوبے میں مزید 90 کیسز سامنے آنے کی تصدیق کی جس کے بعد یہاں متاثرین کی تعداد 3391 ہوگئی۔
چند گھنٹے بعد وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے صوبے میں کورونا وائرس سے ایک اور مریض کے جاں بحق ہونے کی تصدیق کی-
بلوچستان
ادھر بلوچستان میں بھی کورونا وائرس کے مزید 28 نئے کیسز کی تصدیق کی گئی۔
ترجمان بلوچستان حکومت لیاقت شاہوانی نے بتایا کہ صوبے میں 28 نئے کیسز کے بعد متاثرین کی مجموعی تعداد 333 ہوگئی ہے۔
بعد ازاں انہوں نے مزید 2 کیسز کی تصدیق کی جس کے بعد صوبے میں متاثرہ افراد کی تعداد 335 ہوگئی۔
چند گھنٹے بعد لیاقت شوہوانی نے 11 نئے کیسز کی تصدیق کی، یوں متاثرین کی تعداد بڑھ کر 346 ہوگئی ہے۔
خیبر پختونخوا
محکمہ صحت خیبر پختونخوا نے کورونا وائرس کے مزید 93 کیسز سامنے آنے کی تصدیق کی جس کے بعد صوبے میں متاثرہ افراد کی تعداد 1077 ہوگئی۔
ساتھ ہی وائرس سے 5 مریضوں کے جاں بحق ہونے کی بھی تصدیق کی گئی جن میں سے 3 کی پشاور اور 2 کی مانسہرہ میں موت واقع ہوئی۔
خیبر پختونخوا میں کورونا سے اموات 50 ہوچکی ہیں۔
اسلام آباد
سرکاری سطح پر اعداد و شمار بتانے والی ویب سائٹ کے مطابق اسلام آباد میں مزید 9 کیسز رپورٹ ہوئے۔
وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں ان 9 کیسز کے بعد متاثرین کی تعداد 145 سے بڑھ کر 154 ہوگئی ہے۔
گلگت بلتستان
اسی طرح گلگت بلتستان میں بھی کورونا وائرس کے 8 نئے مریض سامنے آئے۔
جس کے بعد گلگت بلتستان میں کورونا متاثرین کی تعداد 237 سے بڑھ کر 245 تک پہنچ گئی ہے۔
صحتیاب
تاہم جس طرح یہ کیسز میں اضافہ ہورہا اسی طرح ملک میں صحتیاب افراد کی تعداد بھی بڑھ رہی ہے اور یہ 1765 تک پہنچ چکی ہے۔
سرکاری اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ روز تک پاکستان میں 1645 افراد صحتیاب ہوئے تھے تاہم ان میں 24 گھنٹوں کے دوران مزید 120 کا اضافہ ہوا اور یہ تعداد 1765 ہوگئی۔
علاوہ ازیں اگر اسلام آباد اور گلگت کے سوا دیگر صوبوں اور علاقوں کے کیسز کی بات کریں تو پنجاب میں سب سے زیادہ 3391 کیسز ہیں۔
اس کے بعد سندھ میں 2217، خیبرپختونخوا میں 1077 افراد متاثر ہوئے ہیں۔
بلوچستان میں یہ تعداد 346 ہے جبکہ آزاد کشمیر میں 46 افراد وائرس سے متاثر ہوئے ہیں۔
اموات کے حساب سے دیکھیں تو سندھ میں اموات سب سے زیادہ ہیں۔
– سندھ: 47 – خیبرپختونخوا: 50 – پنجاب: 37 – بلوچستان: 5 – گلگت بلتستان: 3 – اسلام آباد: 1 – آزاد کشمیر: کوئی نہیں dawnnews-report