پڑھتا جا شرماتا جا ۔۔۔2 ارب 65 کروڑ روپے کے سرکاری اشتہارات گھوسٹ اخبارات کھا گئے

یہ شکایت کافی عرصے سے سامنے آرہی تھی کہ سرکاری افسران اور صحافیوں کہ گٹھ جوڑ یا سیاسی شخصیات کی آشیربادسے ان کے فرنٹ مین مختلف ڈمی اخبارات نکال کر سرکاری اشتہارات پر ہاتھ صاف کر رہے ہیں ایسا صرف اسلام آباد میں نہیں بلکہ چاروں صوبوں میں بھی ہو رہا ہے اربوں روپے کے اشتہارات پچھلے کئی سالوں میں گھوسٹ اخبارات کھا گئے کئی مرتبہ بڑے اخبارات اور میڈیا ہاؤسز کی جانب سے اور اے پی این ایس اور سی پی این ای کی جانب سے یہ معاملہ مختلف حکومتوں کے سامنے اٹھایا گیا اور اس حوالے سے ایکشن لینے کا مطالبہ کیا جاتا رہا حکمران یقین دہانی کراتے رہے لیکن مرض بڑھتا گیا جوں جوں دوا کی ۔
اب ایک تحقیقی رپورٹ کے نتیجے میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ 2062 کروڑ روپے کے سرکاری اشتہارات گھوسٹ اخبارات میں بانٹے گئے اور یہ پیسے مل بانٹ کر افسران صحافیوں اور سیاسی رہنماؤں کے فرنٹ مینوں نے اپنی جیبوں میں ڈالے اس میں ہر صوبے اور ہر علاقے کے لوگ شامل ہیں کوئی اس دوڑ میں کسی سے پیچھے رہنے کے لئے تیار نہیں ۔
ذیل میں ایک لسٹ دی جارہی ہے جس کے ذریعے قارئین بخوبی اندازہ لگا سکتے ہیں کہ سرکاری اشتہارات کی بندربانٹ کیسے ہوتی ہے اور کس طرح اربوں روپے کے عوامی فنڈ کو ٹھکانے لگایا جاتا رہا ہے ۔