ان کے خاندان نے نسل در نسل سماج اور ریاست کی مدد کی ہے

ملک کے بڑے کاروباری گروپوں سے وابستہ اہم کاروباری شخصیات نے میر شکیل الرحمان کی گرفتاری کو بلا جواز قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ جنگ گروپ نے نسل درنسل سماج اور ریاست کی مدد کی ہے ، عارف حبیب کا کہنا ہے کہ میر شکیل الرحمان، جنگ گروپ اور ان کے خاندان نے نسل در نسل سماج اور ریاست کی مدد کی ہے اور وہ ملک کا سب سے بڑا میڈیا ہاؤس ہے۔ اسے دماغ میں رکھتے ہوئے انہیں بھی وہی سہولتیں دی جانی چاہئیں اور انہیں بھی انہی ایس او پیز کے تحت آنا چاہئے جن کا وعدہ تاجر برادری کے ساتھ کیا گیا ہے، جیسا کہ ٹرائل جاری رہنا چاہئے، جسمانی حراست کی کوئی ضرورت نہیں خصوصاً اگر میر شکیل الرحمان نیب کے ساتھ تعاون کر رہے ہیں۔ عقیل کریم ڈیڈھی کا کہنا ہے کہ اگر نیب کا خیال ہے کہ 34 سال پرانی پراپرٹی ٹرانزیکشن میں میرٹ ہے تو اسے عدالت میں ٹرائل شروع کرنا چاہئے۔ لیکن جب تک میر شکیل الرحمان مجرم ثابت نہیں ہوجاتے انہیں گرفتار نہیں کرنا چاہئے۔ یہ ناصرف بنیادی حقوق کے خلاف ہے بلکہ ادارتی آزادی کے خلاف ستم گری کی بھی بو آئے گی۔ حالیہ ماضی میں تاجر برادری نے چیئرمین نیب کو اس طرح کی زبردستی کی شکایت کی تھی اور انہوں نے اچھے انداز میں سن کر نظام میں اعتماد بحال کرنے کا وعدہ کیا تھا۔ جہانگیر صدیقی کا کہنا ہے کہ میر شکیل الرحمان کو ایک آزاد شخص کی حیثیت سے خود کا دفاع کرنے کی اجازت دی جانی چاہئے۔ ہر شخص کو مجرم ثابت ہونے تک معصوم سمجھا جانا چاہئے-jang-news