اہم ایڈوائزر کو اپنی گرفتاری کا خدشہ

سینئر صحافی عارف حمید بھٹی کا کہنا ہے کہ گندم اور آٹا بحران میں تین سے پانچ ارب روپے کی کرپشن تھی۔عمران خان کے ترجمان بتائیں کہ آئی پی پیز میں کتنے ارب کی کرپشن سامنے آئی ہے۔انہوں نے کہا کہ گندم اور چینی کی جو رپورٹ آئی ہے۔اس پر چاردن پہلے ایک ایڈوائزر نے پنجاب آکر اہم شخصیت کو کہا ہے کہ ان کی گرفتاری ہوجائے گی۔
انہوں نے کہا کہ آئی پی پیز کہ پیسے پکڑ لئے جائیں تو بجلی سستی ہو جائے گی۔وزیراعظم کو 23 مارچ کو بریفنگ دی گئی جس میں مفاد پرست ٹولہ بھی شامل تھا اور ان کے دو ایڈوائزر بھی تھے جو اسٹیک ہولڈرز ہیں،وزیراعظم کو 50 ارب روپے کی کرپشن پر بھی بریفنگ دی گئی۔عمران خان کے سامنے جو کرپشن آئی انہوں نے اس پر پردہ ڈال دیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ آٹا چینی بحران میں تین سے پانچ روپے کی کرپشن تھی۔

وزیراعظم کے ترجمان بتائیں کہ آی پی پیز میں میں کتنے ارب کی کرپشن سامنے آئی ہے۔ عارف حمید بھٹی کا کہنا ہے کہ 25 اپریل کو آٹا اور چینی ممبران کی رپورٹ سامنے آئے گی تو دو اہم شخصیات گرفتار ہوگی۔ان کا کہنا تھا کہ چینی اور آٹا بحران کی 2 انکوائری ٹیمیں بنائی گئی ہیں۔ ایک ٹیم ڈمی ہے جب کہ دوسری ٹیم اصلی ہےجس میں ایماندار لوگ ہیں۔اور ان کی بنائی گئی رپورٹ میں دو اہم شخصیات کو بحران کا ذمہ دار قرار دے دیا گیا ہے۔
اگر چینی اور آٹا بحران کی یہ رپورٹ 25 اپریل کو سامنے آگئی دو اہم شخصیات گرفتار ہوگی۔قبل ازیں معروف صحافی عارف حمید بھٹی کا کہنا تھا کہ کیا سبسڈی لینا غیرقانونی کام ہے؟ اس رپورٹ کو چیف جسٹس کے پاس بھیج دیا جائے تو اس پر کوئی کارروائی نہیں ہوسکتی۔ چینی بحران رپورٹ پر قانوناً کوئی کارروائی نہیں ہوسکتی۔تو پھر بتایا جائے انہوں نے کون سا بڑا سانپ پکڑلیا ہے جو 22 کروڑ عوام کو ڈسنے جا رہا تھا۔ یہ لڑائی اس وقت شروع ہوئی جب جہانگیرترین کا سپریم کورٹ میں نااہلی کا کیس چل رہا تھا۔ایک مہنگے ترین ہوٹل میں جہانگیر ترین کے خلاف کاغذات اکٹھے کرائے گئے۔یہ کام لندن کے بہت بڑے انویسٹر نے کیا