جوبیمارہیں وہ مسجد نہ آئیں -اب لاک ڈائون کا اطلاق مساجد پر نہیں ہوگا

ممتازعالم دین مفتی اعظم مفتی تقی عثمانی،روئیت حلال کمیٹی کے چیئرمین مفتی منیب الرحمان،جے یوآئی سندھ کے سیکریٹری جنرل علامہ راشد محمود ،مولانااویس نورانی،مفتی ڈاکٹرعادل،مولانا محمد سلفی،ڈاکٹراسرارودیگر کی پریس کانفرنسمفتی تقی عثمانیوباسے متاثرہونے والوں کی مدد کرنے والی حکومت اورادارے قابل تعریف ہیںحکومت کی احتیاتی تدابیرپرعمل کرنا وقت کی ضرورت ہےسپر مارکیٹس اورضروریات زندگی کی اشیاء کی مارکیٹس کھلی ہیں سماجی دوری ان کوبھی کرنی چاہیئےاللہ سے رجوعوباسے نجات کا ذریعہ ہےموجودہ حالات میں احتیاطی تدابیرکے ساتھ نماز جمع نماز پنج وقت ضروری ہےجوبیمارہیں وہ مسجد نہ آئیںجمعےکے خطبے میں اردو خطبہ نہ دیا جائے ضروری ہوتو پانچ منٹ سے زیادہ نہ ہوعلماء اکرام پر ایف آئی آرزکا اندراج غلط فہمیوں کاباعث ہے ان کو ختم اورگرفتارعلماء کورہا کیا جائےمسجدوں سے قالین ہٹاکر فرش پر نماز کااہتمام کیا جائےسینیٹائیزر کی موجودگی یقینی بنائیںوضوتمام نمازی گھرسے کرکرآئیںسنتیں نوافل گھرپرپڑہے جائیںکچھ لوگ کورونا وائرس کوحقیقت نہیں سمجھتے ہیںیہ غلط ہے مفتی منیب الرحمان  اب لاک ڈائون کا اطلاق مساجد پر نہیں ہوگاوزیراعظم نے کہا لاک ڈائون کریں اپنے ذمینی حقائق بھی دیکھیںکشمیر کے بھائی بھی اس وقت مظالم کا شکارہیں مذمت کرتے ہیںکشمیری بھائیوں کے ساتھ ہیںتین ماہ کے لئے مساجداوردینی اداروں کے بل معاف کئے جائیںریاست پورے ملک کے مسلمانوں کی مدد اوکفالت کرےمساجد پرلاک ڈاون کا اطلاق نہیں ہوگا۔مفتی منیب الرحمان  کراچی۔نماز جمعہ۔نماز تراویح کا اہتمام ہوگا۔مفتی منیب الرحمان  کراچی۔مساجدمیں سینیٹائزراور جراثیم کا کش اسپرے کو یقینی بنایاجاےگا۔مفتی منیب الرحمان