کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے لانڈھی کے نجی و سرکاری ہسپتالوں میں او پی ڈیز بند کرنے کا حکم

کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے لانڈھی کے نجی و سرکاری ہسپتالوں میں او پی ڈیز بند کرنے کا حکم کورونا کے خلاف کام کرنے تمام ادارے تعریف کے مستحق ہیں۔ غلام مرتضیٰ بلوچ کراچی۔ 14 اپریل۔ صوبائی وزیر برائے انسانی بستیوں و خصوصی ترقی غلام مرتضیٰ بلوچ نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کے خلاف اپنی خدمات انجام دینے والے تمام ادارے خاص کر ڈاکٹرز، طبی عملہ اور قانون نافذ کرنے والے تعریف کے مستحق ہیں اور پوری قوم ان کو سیلوٹ کرتی ہے۔ یہ بات آج انہوں نے وزیر اعلئ سندھ سید مراد علی شاھ کی ہدایت پر کورونا وائرس پر ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔ اجلاس میں رکن قومی اسمبلی سید آغا رفیع اللہ،  ڈپٹی کمشنر ملیر شھزاد فضل عباسی , ڈی ایچ او ملیر ڈاکٹر احمد علی میمن سمیت متعلقہ محکموں کے افسران نے بھی شرکت کی۔ اجلاس کو ڈی ایچ او ملیر ڈاکٹر احمد علی میمن نے بتایا کہ اب تک ضلع ملیر میں 67 افراد کے کورونا ٹیسٹ پازیٹو آئے ہیں ۔صوبائی وزیر غلام مرتضیٰ بلوچ نے ڈی ایچ او ملیر کو لانڈھی میں کیسز آنے پر لانڈھی کی پانچ یونین کونسلز کے تمام نجی و سرکاری ہسپتالوں کی او پی ڈیز فوری بند کرنی کی ہدایت کی۔ اجلاس کو  سندھ حکومت اور انڈس کے تعاون سے گلشن حدید میں مفت کورونا ٹیسٹ کیمپ کے متعلق بھی آگاہی دی گئی۔  اجلاس کو بتایا گیا کہ گلشن حدید کئمپ میں 38 افراد کے کورونا ٹیسٹ سیمپل لئے گئے ۔قبل ازیں صوبائی وزیر غلام مرتضئ بلوچ اور رکن قومی اسمبلی سید آغا رفیع اللہ نے گلشن حدید کیمپ کا دورہ بھی کیا ۔ اس موقع پر صوبائی وزیر  غلام مرتضیٰ بلوچ نے کورونا ٹیسٹ کیمپ پر ڈاکٹرز اور پیرامیڈکس کو شاباشی دی اور سلیوٹ بھی کیا ۔ انہوں نے کہا کہ گلشن حدید کے بعد ملیر کے مظفر آباد اور شرافی گوٹھ میں بھی کورونا ٹیسٹ کیمپ لگائے جائیں گے ۔ غلام مرتضیٰ بلوچ نے کہا کہ کورونا وائرس کا کوئی اور علاج نہیں سوائے سماجی فاصلوں کے اور عوام کو چاہیے وہ کہ سندھ حکومت کے لاک ڈاؤن پر مکمل عمل کریں ۔ انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت عوام کے تعاون سے کورونا سے بھرپور جنگ لڑ رہی ہے۔