بہت دیر کردی مہرباں آتے آتے ۔چیئرمین عبدالبر کی غفلت اور لاپرواہی کی وجہ سے حکومت سندھ کو ایکشن لینا پڑا ۔کراچی فش ہاربر اتھارٹی کی تمام سرگرمیاں بند کرنے کا حکم جاری

ماہی گیروں اور مچھلی کی خرید و فروخت کے کاروبار میں کرونا وائرس پھیلنے کی شدید خطرات سامنے آنے کے بعد حکومت سندھ نے بالآخر کراچی فش ہاربر اتھارٹی کی تمام سرگرمیوں پر پابندی لگادی تمام سرگرمیاں بند کرنے کا حکم جاری کر دیا گیا ۔محکمہ فشریز حکومت سندھ کے سیکرٹری کے حکم پر سرگرمیاں معطل کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کیا گیا جس کے مطابق کرو نہ سے متعلق ایس او پیز پر عملدرآمد یقینی بنایا جائے گا اس نوٹیفیکیشن کے اجرا سے یہ بات ثابت ہوگئی کہ چیئرمین فشرمین کوآپریٹو سوسائٹی عبد البر کے دعوے غلط تھے ان کی سربراہی میں وہ تمام حفاظتی اقدامات یقینی نہیں بنائے گئے تھے جن کی ضرورت تھی اسی وجہ سے حکومت سندھ نے ضروری سمجھا کہ کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے سرگرمیاں معطل کرنے کا نوٹیفیکیشن جاری کیا جائے فش ہاربر پر دوران حکام سماجی فاصلہ رکھنے کی شکایت سامنے آچکی تھی تصاویر اور ویڈیوز چیخ چیخ کر بتا رہی تھی کہ کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کا کوئی انتظام نہیں کیا گیا ۔فش ہاربر کی سرگرمیوں نے عملی طور پر حکومت سندھ اور خاص طور پر وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ کی اب تک کی گئی تمام کاوشوں اور دن رات کی محنت پر پانی پھیر دیا تھا وہاں کی ویڈیوز اور تصاویر دیکھ کر خود وزیراعلی اور حکومتی شخصیات حیران رہ گئی اور فوری طور پر نوٹیفیکیشن جاری کیا گیا ۔میڈیا خاص طور پر جیوے پاکستان ڈاٹ کام نے اپنی خصوصی رپورٹ میں بار بار حکومت سندھ اور دیگر متعلقہ قانون نافذ کرنے والے اداروں کی توجہ خاص غفلت لاپرواہی اور مجرمانہ غفلت کی جانب مبذول کرائی تھی تاکہ فوری طور پر چیئرمین عبدالبر کی نااہلی غفلت اور لالچ کا نوٹس لیا جائے اور وہاں پر ماہی گیروں اور مچھلی کے کاروبار میں شامل لوگوں کی زندگیوں کو محفوظ بنایا جائے خدا خدا کرکے متعلقہ ادارے حرکت میں آئے اور نوٹیفیکیشن جاری کردیا گیا جس کے ساتھ ہی سرگرمیاں معطل کرنے کا فیصلہ ہوا ۔