زمان ٹاؤن پولیس کا کارنامہ پبلک کے ہاتھوں گرفتار ہونے والا ڈاکو تھانے سے فرار کرادیا

زمان ٹاؤن پولیس کا کارنامہ پبلک کے ہاتھوں گرفتار ہونے والا ڈاکو تھانے سے فرار کرادیا لاک ڈاؤن کے دوران گزشتہ 10 دن سے پولیس کی وردیوں میں ملبوس اور سادے لباس میں کچھ لوگ ہیں جو گھروں میں گھس کر وارداتیں کررہے ہیں اور جو کوئی رات کو دیر سےرہاگیر آرہا ہے اس سے موبائل فون اور پیسے  چھین رہے ہیں تھانہ زمان ٹاؤن میں واقع کی کئی بار شکایات کی پولیس نے کوئ کاروائی نہیں کی  3روز قبل عوام نے اپنی مدد آپ کے تحت کورنگی ڈی ایریا ساڑھے پانچ نزد منا بھجیا ان ڈاکوؤں کو پکڑنے کی کوشیش کی ایک ڈاکو کو پکڑنے میں کامیاب ہوگئے باقی بھاگ گئے پکڑنے والے ڈاکو کی عوام نے ویڈیو بناکر 15 مددگار اے ایس آئی آصف کے حوالے کردیا ویڈیو میں ڈاکو نے اعتراف کیا ہے کے اس کے ساتھ پولیس اہلکار ارشد گھوڑا۔صادق۔اور بابر بھی تھے یہ تینوں اہلکار زمان ٹاؤن انویسٹیگیشن میں تعینات ہیں اور اس وقت ان کی ڈیوٹی ناکے پر تھی۔وہاں سے غیر حاضر  ہو کر یہ علاقے میں اسٹریٹ کرائم اور ڈکیتیاں کرتے تھے۔ارشد گھوڑے نے ایک سال قبل ایک جوئے کے اڈے سے ساڑھے سات لاکھ روپے لوٹے تھے جو کہ ارشد گھوڑا اور کئ پولیس اہلکاروں کے خلاف انکوائری میں ثابت بھی ہوگیا تھا لیکن یہ اسوقت کے ایس ایس پی کورنگی علی رضا کے لاڈلے تھے علی رضا صاحب نے اسوقت کے ڈی آئی جی ایسٹ عامر فاروقی سے بول کر پینڈنگ کروالی  وہ انکوائری آج بھی ڈی آئی جی ایسٹ کے دفتر میں پینڈنگ پڑی ہے۔آج جب علاقے کے لوگ ڈاکو کے بارے میں معلوم کرنے زمان ٹاؤن تھانے گئے تو وہاں موجود انٹیلیجنس آفیسر نعیم نے بتایا کہ ڈاکو تھانے سے فرار ہوگیاڈاکو کا فرار ہونا سندھ پولیس پر سوالیہ نشان ہے