کرونا وائرس کا خوفناک پھیلاؤ، کراچی کی 11 یونین کونسلز سیل، میئر لاعلم

ڈپٹی کمشنر کی ہدایت پر رینجرز اور پولیس کی بھاری نفری نے مختلف علاقوں کی 11 یونین کونسلز کو سیل کیا اور عوام کو ہدایت کی کہ وہ گھروں میں ہی رہیں۔

اُن کا کہنا تھا کہ مذکورہ یوسیز میں 150 سے زائد کیسز رپورٹ ہوئے اسی وجہ سے انہیں سیل کرنے کا فیصلہ کیا گیا، علاقے میں رینجرز اور پولیس کی بھاری نفری تعینات کی جائے گی اور داخلی خارجی راستے بند کیے جائیں گے۔

ڈپٹی کمشنر ایسٹ احمد علی کا کہنا تھا کہ کیسز زیادہ ہونے کی وجہ سے مذکورہ یوسیز کے تمام شہریوں کا ٹیسٹ کیا جائے گا اور صورت حال بہتر ہوتے ہی پابندی اٹھا لی جائے گی۔

انہوں نے بتایا کہ ’ان یوسیز میں اشیائے خوردو نوش اور ادویات کی ترسیل جاری رہےگی، کوشش کریں کے گےمریض کو گھر پر رکھیں اگرممکن نہ ہوسکا تو اُسے قرنطینہ منتقل کریں گے‘۔

ڈپٹی کمشنر ایسٹ کے مطابق یوسی 6 گیلانی ریلوے، یوسی 7 ڈالمیا، یوسی 8 جمال کالونی، یوسی 9 گلشن 2، یوسی 10 پہلوان گوٹھ، یوسی 12 گلزار ہجری، یوسی 13 صفورا، یوسی فیصل کینٹ، یوسی 2 منظور کالونی، یوسی9جیکب لائن اوریوسی10جمشیدکوارٹرز کو مکمل بند کردیا جائے گا۔

سندھ حکومت کے ترجمان بیرسٹر مرتضیٰ وہاب نے اے آر وائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ’لاک ڈاؤن میں نرمی یاسختی سےمتعلق سندھ حکومت نے تاحال کوئی فیصلہ نہیں کیا، جیسے ہی کوئی فیصلہ کیا جائے گا اُس کا اعلان کریں گے۔

انہوں نے بتایا کہ کراچی کی 11 یوسیزمیں نقل وحرکت پرمکمل پابندی ہوگی، متعلقہ یوسیز میں شہریوں کو صرف کھانے کی اشیا اور ادویات خریدنے کے لیے گھروں سے نکلنے کی اجازت ہوگی۔ مرتضیٰ وہاب کا کہنا تھا کہ کرونا کیسز مزید بڑھنےسےروکنے کے لیے یوسیزسیل کرنےکافیصلہ کیاگیا ہے‘۔

دریں اثنا میئرکراچی وسیم اختر نے اے آر وائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ’میڈیا کےذریعےیوسیزکوسیل کرنے کا پتہ چلا،ایک میٹنگ ہوئی میرے خیال سے وہاں اسی معاملے پر گفتگو کی گئی ہوگی

Courtesy ary urdu