امریکہ میں کورونا کی تباہ کاریاں -مزید 1920 افراد ہلاک -30 ہزار سے زائد نئے کیسز سامنے آنے کے بعد متاثرہ افراد کی تعداد 5 لاکھ 32 ہزار

امریکہ میں کورونا کی تباہ کاریاں جاری، مزید 1920 افراد ہلاک ہو گئے۔ 30 ہزار سے زائد نئے کیسز سامنے آنے کے بعد وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد 5 لاکھ 32 ہزار سے تجاوز کر گئی۔ تفصیلات کے مطابق امریکہ میں کورونا وائرس سے ہونے والی ہلاکتوں کا زور تھمنے کا نام نہیں لے رہا۔ روزانہ کی بنیاد پر سینکڑوں افراد کی ہلاکتوں کے سلسلے میں دن بدن شدت دیکھنے میں آ رہی ہے۔
کم و بیش امریکہ میں روزانہ کی بنیاد پر 1 ہزار سے زائد ہلاکتوں کا دوسرا ہفتہ جاری ہے ۔ گزشتہ 3 دنوں کے اعداد و شمار پر نظر ڈالی جائے تو 9 اور 10 اپریل کو امریکہ میں 1900 سے زائد ہلاکتیں ریکارڈ کی گئی تھیں جبکہ گزشتہ روز 11 اپریل کو ایک دن میں ہونے والی سب سے زیادہ 2035 ہلاکتیں ریکارڈ کی گئیں جو کہ کورونا کے باعث ایک دن میں ہونے والی کسی بھی ملک میں سب سے زیادہ ہلاکتیں ہیں۔ خبر ایجنسی کے مطابق جون ہوپکنز ہونیورسٹی کی طرف سے جاری تازہ اعداد و شمار میں بتایا گیا ہے امریکہ میں مہلک وائرس سے متاثرہ مزید 1920 افراد جان کی بازی ہار گئے ہیں جس کے بعد امریکہ میں کورونا سے ہلاک افراد کی مجموعی تعداد 20 ہزار 577 کی سطح کو جا پہنچی ہے۔ کورونا وائرس سے ہونی والی سب سے زیادہ ہلاکتیں ریکارڈ کرنے والے ممالک میں امریکہ نے اٹلی کو بھی چھوڑ دیا ہے۔ اس سے قبل اٹلی کورونا وائرس سے سب سے زیادہ ہلاکتیں ریکارڈ کرنے والا ملک تھا۔ تازہ اعدا و شمار کے مطابق اٹلی میں مہلک وائرس سے ہلاک افراد کی تعداد 19 ہزار 468 ہے جبکہ امریکہ میں ہلاک افراد کی تعداد 20 ہزار سے بھی تجاوز کر چکی ہے۔ خبر ایجنسی کے مطابق 30 ہزار سے زائد نئے کیسز سامنے آنے کے بعد امریکہ میں وائرس سے متاثرہ افراد کی مجموعی تعداد 5 لاکھ 32 ہزار 869 ہو گئی ہے۔
مزید تفصیلات کے مطابق امریکہ کورونا وائرس سے ہونے والی ہلاکتوں کے اعتبار سے دنیا کا سب سے زیادہ متاثرہ ملک بن گیا ہے۔ دنیا کے سب سے طاقتور ملک میں اب تک 20 ہزار سے زائد افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں جبکہ 5 لاکھ سے زائد افراد کورونا میں مبتلا ہو چکے ہیں۔ امریکہ کے علاوہ اٹلی، اسپین، فرانس اور جرمنی کورونا وائرس سے سب سے زیادہ متاثر ہونے والے ممالک ہیں۔ فی الحال دنیا کے بیشتر ممالک لاک ڈاؤن کے ذریعے اس مہلک وبا پر قابو پانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ اس حوالے سے عالمی ادارہ صحت نے خبردار کیا ہے کہ لاک ڈاؤن جلدی ہٹایا گیا تو کورونا کی وبا تباہ کن حد تک دوبارہ نمودار ہوسکتی ہے۔ اس لیے تمام ممالک کو پابندیوں میں نرمی لانے کے بارے میں احتیاط برتنی چاہیے۔
اٹلی میں کورونا وائرس سے مزید 619 افراد ہلاک ہوگئے جس کے بعد یہاں اموات کی کُل تعداد 19 ہزار 468 ہوگئی ہے۔ اٹلی کی سول پروٹیکشن سروس کے یہ اعداد و شمار امریکا میں جونز ہوپکنز یونیورسٹی کے 18 ہزار 860 ہلاکتوں کے اعداد و شمار سے زیادہ ہیں فرانس میں کورونا وائرس سے ہلاکتیں بڑھ کر 13 ہزار 832 ہوگئیں تاہم انتہائی نگہداشت میں مریضوں کی تعداد مسلسل تیسرے روز کم ہوئی ہے جس سے یہ امید بڑھی ہے کہ ملک بھر میں لاک ڈاؤن کے باعث وائرس کے پھیلاؤ میں کمی آرہی ہے۔
فرانس کی وزارت صحت نے کہا کہ 353 افراد ہسپتالوں جبکہ 290 نرسنگ ہومز میں ہلاک ہوئے۔
انتہائی نگہداشت یونٹس میں موجود مریضوں کی تعداد کم ہوکر 6 ہزار 883 ہوگئی ہے۔

دنیا کا واحد ملک جہاں کورونا وائرس کے تمام مریض صحتیاب ہوگئے
دنیا کا واحد ملک جس نے نئے نوول کورونا وائرس کی وبا پر مکمل طور پر قابو پالیا اور اب وہاں کوئی بھی اس سے ہونے والی بیماری کووڈ 19 کا شکار نہیں رہا۔
جی ہاں گرین لینڈ اس وقت دنیا کا پہلا اور واحد ملک ہے جہاں اس وائرس کے مریض سامنے آئے مگر تمام 11 مریض اب صحتیاب ہوچکے ہیں۔
گرین لینڈ کے نیشنل میڈیکل آفس کے مطابق 57 ہزار آبادی والے اس ملک میں 844 ٹیسٹوں میں 11 افراد میں کووڈ 19 کی تصدیق ہوئی تھی۔
گرین لینڈ کے تمام کیسز دارالحکومت نوک میں سامنے آئے تھے جس کی آبادی 18 ہزار سے زائد ہے۔