صوبائی حکومت مکمل طور پر غافل اور کورونا وائرس کے صوبے میں پھیلا ؤکی ذمہ دار ہے، اختر مینگل

بلوچستان نیشنل پارٹی (مینگل ) کے سربراہ اورحکومت کے اتحادی سردار اختر مینگل نے کہاہے کہ وزیراعظم عمران خان کو دورہ کوئٹہ کےموقع پر غلط بریفنگ دی گئی ‘زمینی حقائق کچھ اورہیں ‘کوئٹہ میں نہ ٹیسٹنگ کٹس ہیں اور نہ ہی صحت کی سہولیات جس سے اندازہ لگایا جاسکتاہے کہ باقی علاقوں میں کیا حال ہوگا ۔جمعرات کو سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر اپنے بیان میں اخترمینگل نے وزیراعظم کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ میں آپکو بتانا چاہتا ہوں کہ آپکو کورونا وائرس سے متعلق جو بھی بریفنگ دی گئی ہے وہ مکمل طور پر ناقص ہے جبکہ زمینی حقائق کچھ اور ہیں‘ بنیادی حفاظتی آلات کی عدم فراہمی کی وجہ سے ڈاکٹرز اور دیگر طبی عملہ احتجاج پر ہے جبکہ صوبے میں حفاظتی انتظامات اور آلات نہ ہونے کے برابر ہیں‘ صوبائی دارالحکومت کوئٹہ کا یہ حال ہے تو اندرون بلوچستان کیا صورتحال ہوگی، جبکہ دورے کے دوران آپکو “سب اچھا ہے” کا جو تاثر دیا گیا ہے وہ سراسر غلط ہے‘ صوبائی حکومت مکمل طور پر غافل اور کورونا وائرس کے صوبے میں پھیلا ؤکی ذمہ دار ہے۔

دوسری طرف سردار ثناءاللہ بلوچ نے بھی کہا ہے کہ وفاقی حکومت کو بلوچستان آنے میں 45 دن لگ گئے جبکہ اسلام آباد سے کوئٹہ کا فاصلہ بذریعہ ہوائی جہاز صرف 45 منٹ کا ہے 45 دن پہلے تفتان بارڈر سے یہ سارا معاملہ شروع ہوا تھا اور وزیراعظم کو بلوچستان آنے میں 45 دن لگ گئے ہیں پھر بھی انہیں جو بریفنگ دی گئی وہ حقائق اور زمینی حقائق سے بالکل برعکس ہے سمجھ نہیں آرہا بلوچستان میں ہر مہینے 35ارب روپے کا ڈویلپمنٹ کہاں فرق ہوتا ہے