سندھ نے کورونا سے نمٹنے کے لیئے لاک ڈاوَن میں تیزی دکھائی اسی لیئے یہاں دوسرے صوبوں سے بہتر صورتحال ہے

پیپلز پارٹی کی سی ای سی کے رکن اور رکن قومی اسمبلی نواب یوسف تالپور نے وفاقی وزیرمراد سعید کے اس بیان کی شدید مذمت کی ہے کہ سندھ کے وزیر اعلیٰ نے لاک ڈاون میں جلدی کی جس کی وجہ سے وہاں مسائل پیدا ہو ئے ۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ مراد علی شاہ نے سندھ میں پہلا کوروناکیس کا سنتے ہی وفاقی حکومت سے اس کے تدارک کے لیئے درخواست کی لیکن انہوں نے ایک ہفتے تک کوئی کاروائی نہیں کی جس کی وجہ سے سندھ کے مفاد میں ایکشن لیا گیا اگر وفاقی حکومت کا انتظار کیئے بغیر آٹھ دن قبل ایکشن لے لیا ہوتا تو صورتحال اور بہتر ہوتی ۔ انہوں نے کہا کہ وفاق سے مایوس ہوکر وزیر اعلیٰ نے خود سے فوری اقدامات شروع کیئے جس کی وجہ سے آج یہاں دوسرے صوبوں کے مقابلے میں بہتر صورتحال ہے ۔ انہوں نے کہا سندھ میں زائرین سب سے پہلے آئے تھے اس لیئے انہیں علاج کے لیئے سب سے پہلے سکھر میں قرنطینہ سینٹربنا کر وہاں رکھا گیا جس کی نگرانی خود وزیر اعلیٰ کر رہے ہیں یہی وجہ ہے کہ وہ تمام لوگ صحت یاب ہو کر اپنے گھروں کو جا چکے ہیں اور بعد میں جن مریضوں کی نشاندہی ہوئی انہیں بھی وہاں رکھا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت بھی سکھر میں لیبر کالونی میں بہترین سہولتوں کے ساتھ قرنطینہ سنیٹر موجود ہے جہاں کورونا کے مریضوں کا علاج ہو رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کراچی میں ایکسپو سینٹر میں بھی وزیرا علیٰ نے بہترین سہولتوں کے ساتھ قرنطینہ سینٹر بنایا ہے اور یہ سب مراد علی شاہ کی کورونا سے جنگ میں بہتر ین کاوشیں شمار کی جاتی ہے جس کا اعتراف ناصرف ملکی سطح پر بلکہ بین الاقوامی سطح پر کیا جارہاہے ۔ انہوں نے کہا کہ سندھ میں پہلا کیس آنے کے بعد اگر وزیر اعلیٰ فوری طور پر لاک ڈاوَن نہیں کرتے تو آج یہاں کورونا کے مریضوں کی بے تحاشہ تعداد ہوتی جسے سنبھالنا مشکل ہوجاتا ۔ انہوں نے کہا ایک سیاسی اور عوامی لیڈر ہونے کے ناطے مراد علی شاہ نے صوبے اور عوام کے مفاد میں جو فیصلے کیئے وہ ایک حقیقی عوامی لیڈر کے فیصلے ہیں جسے سندھ کے عوام قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ مراد سعید اپنے لیڈر کی نگاہوں میں اپنا قد بڑھانے کے لیئے وزیر اعلیٰ سندھ پر تنقید کر رہے ہیں پھر یہ کہ سندھ کی حکومت وفاقی حکومت کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر جس طرح بات کر رہی ہے وہ ان سب کی آنکھوں میں کھٹک رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم مراد سعید، ان کے مربی اور ان کے ہم نواؤں کو مشورہ دیں گے کہ وہ سندھ کو چھوڑیں اور اپنے کاموں کو دیکھیں جو اب تک ناکام رہے ہیں اور ان کے مربی کو ٹی وی پر آ کر آئے دن وضاحتیں دینی پڑ رہی ہیں ۔