کورونا پاکستان کے سرکاری افسران تک پہنچ گیا، بیورو کریسی میں تشویش، اہل خانہ پریشان

کورونا وائرس کے بڑھتے ہوئے کیسز پر وفاقی بیورو کریسی نے سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے سول سرونٹس کو محفوظ رکھنے کیلئے حکومتی پالیسی کا مطالبہ کر دیا ہے۔سول سرونٹس نے کہا کہ غیرحاضری پرشوکاز کے سوا حکومت نے کچھ نہیں کیا، وائرس سے بچانے کیلئے فی الفور پالیسی لائی جائے، ذرائع کے مطا بق وفاقی بیورو کریسی کے مطابق متعدد وفاقی سیکرٹریز و افسران نے کرونا ٹیسٹ کروائے ہیں جن کی رپورٹس آنے پر وزارتِ موسمیاتی تبدیلی، وزارتِ تجارت اور بعض دیگر وزارتوں کے چند افسران میں کرونا وائرس ٹیسٹ پازیٹو آئے ہیں۔

واضح رہے کہ سرکاری افسران میں سب سے پہلا کیس کراچی میں وزیراعلی کے بہنوئی میں سامنے آیا تھا اور ان کے پورے اہل خانہ کے ٹیسٹ کرائے گئے تھے سرکاری ذرائع کا کہنا ہے کہ مختلف شہروں میں سرکاری افسران اور ان کے رشتے دار موجودہ صورتحال پر سخت تشویش میں مبتلا ہیں خاص طور پر وہ سرکاری افسران جنہیں ڈیوٹی پر بلایا جارہا ہے ان کے گھر والے بہت فکرمند ہیں کراچی میں وفاقی حکومت کے ایک ادارہ کے کچھ ملازمین کو دفتر میں ہی رکھ لیا گیا ہے کیونکہ ان میکرونہ کی علامات پائی گئی ہیں