جہانگیر ترین پر 56 کروڑ روپے کمانے کا الزام مضحکہ خیز قرار، 23 ارب روپے تو ٹیکس ادا کیا ہے

چینی اسکینڈل سامنے آنے کے بعد ایف آئی اے کی رپورٹ کے حوالے سے جہانگیر ترین پر جو الزامات لگائے جارہے ہیں اس پر مبصرین کا کہنا ہے کہ جہانگیر ترین کے بزنس کا جتنا بڑا سائز ہے اس کو دیکھتے ہوئے صرف 55 کروڑ روپے کمانے کا الزام مضحکہ خیز قرار دیا جاسکتا ہے کیونکہ جہانگیر ترین ارب روپئے توں ٹیکس ادا کرتے ہیں ۔ واضح رہے کہ شاہد خاقان عباسی کے مطابق جہانگیر ترین کو 56کروڑ لگوانے کا موقع ملا جبکہ خود جہانگیرترین نے ٹی وی انٹرویو میں انکشاف کیا ہے کہ وہ پانچ سال کے دوران 23 ارب روپے ٹیکس ادا کرچکے ہیں ۔

جہانگیر ترین کا کہنا ہے کہ پاکستان میں چینی کا سیزن سو دن کا ہوتا ہے سودن میں چینی بنتی ہے اور اگلے تین سو دن میں بکتی ہے ۔ان کا کہنا ہے کہ پاکستان میں چینی کی قیمت بڑھنے کی بنیادی وجہ گنے کی قیمت میں اضافہ ہے چینی بننے میں 80فیصد کاسٹ اور پروڈکشن کا انحصار کرنے کی قیمت پر ہوتا ہے جہانگیر ترین کا دعویٰ ہے کہ وہ ہمیشہ کاشتکاروں کو اچھی قیمت دیتے ہیں اور 180 روپے کے حساب سے گندا خریدتے رہے ہیں اس لیے کاشت کار ان کی ملوں کو گنا دیتے ہیں ۔