حافظ حسین احمد کی بابراعوان سے کیا لڑائی شروع ہو گئی؟

جمیعت علماء اسلام کے مرکزی ترجمان اور سابق پارلیمنٹرین حافظ حسین احمد نے بابر اعوان کے خلاف نیا محاذ کھول دیا ہے ان کا کہنا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کی جانب سے بابر اعوان کو پارلیمانی مشیر بنانا پارلیمنٹ کی توہین ہے کیونکہ بابر اعوان کو عوام نے منتخب نہیں کیا وہ ایک غیر منتخب شخص ہیں اور انہیں عوامی نمائندوں کی پارلیمنٹ میں ایک پارلیمانی مشیر کی حیثیت سے بھیجنا پارلیمنٹ کی توہین کے مترادف ہے حافظ حسین احمد کا مزید کہنا ہے کہ خسروبختیار اور جہانگیر ترین کو عہدوں سے ہٹانے سے ثابت ہوگیا کہ وہ بدعنوانی میں ملوث ہیں ۔خسرو بختیار کو اپنے عہدے سے ہٹانے سے واضح ہوتا ہے کہ بدعنوانی کے حوالے سے ایف آئی اے کی رپورٹ ٹھیک ہے۔