پاکستان کی ایک یونیورسٹی کو چین کی جانب سے بھیجے گئے 7000 ماسک موصول

پاکستان کی ایک بڑی یونیورسٹی کو کرونا وائرس کے پھیلاؤ سے بچنے کے لیے چین کی جانب سے بھیجے گئے 7000 ماسک موصول ہوگئے ہیں یہ وہی یونیورسٹی ہے جس نے پاکستان میں سب سے پہلے چینی زبان کی تدریس کا آغاز کیا ۔ یقینی طور پر آپ میں سے بہت سے لوگ سمجھ گئے ہوں گے کہ یہ کونسی یونیورسٹی کا ذکر ہے اگر آپ کو نہیں معلوم تو آپ کو بتا دیتے ہیں کہ یہ جامعہ کراچی کا ذکر ہو رہا ہے ۔
کراچی یونیورسٹی کلینک کو پیرکے روز چین کی سچوان نارمل یونیورسٹی کی جانب سے جامعہ کراچی کے تدریسی اور غیر تدریسی عملے کے لئے 7000 سرجیکل ماسک بشمول 50 سے زائد این 95 ماسک فراہم کئے گئے ۔مذکورہ ماسک جامعہ کراچی کے کنفیوشس انسٹی ٹیوٹ برائے چینی زبان کے چینی ڈائریکٹر شائوپنگ سے جامعہ کراچی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر خالد محمود عراقی ،رجسٹرار جامعہ کراچی پروفیسر ڈاکٹر سلیم شہزاد اور سینئر میڈیکل آفیسرجامعہ کراچی ڈاکٹر سید عابدحسن نے وصول کئے۔

اس موقع پرکنفیوشس انسٹی ٹیوٹ برائے چینی زبان کے پاکستانی ڈائریکٹر پروفیسر ڈاکٹر ناصر الدین خان بھی موجودتھے۔ جامعہ کراچی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر خالد محمود عراقی نے چینی حکومت کا شکریہ اداکرتے ہوئے کہا کہ چین نے کورونا وائر س کو شکست دے کر یہ ثابت کردیا ہے کہ ہمت اور حوصلے سے بڑی سے بڑی مشکلات کا بھی مقابلہ کیاجاسکتا ہے۔ ہمیں اس وبا کا من حیث القوم مقابلہ کرنے کی ضرورت ہے اور حکومت کی جانب سے جاری کردہ احکامات پر عمل پیرا ہوکر ہی ہم اس وبا کا بہتر طور پر مقابلہ کرسکتے ہیں۔ کنفیوشس انسٹی ٹیوٹ برائے چینی زبان جامعہکراچی کے چینی ڈائریکٹر شاؤپنگ نے کہا کہ پاک چین دوستی ہر مشکل وقت میں اور مضبوط اور گہری ہوتی جارہی ہے۔حالیہ کرونا وائرس کے مسئلے نے جب چین میں سراُٹھایا تھا تو نہ صرف پاکستانی حکومت بلکہ پاکستانی عوام نے بھی چین اور چینی عوام سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے نیک تمنائوں کا اظہار کیا تھا –