لاک ڈاؤن کے دوران کراچی واٹراینڈ سیوریج بورڈ کی کارکردگی ملک کے دیگراداروں کے مقابلے میں نمایاں اورقابل ستائش

کراچی :  کروناکی وباکے باعث نافذ عمل لاک ڈاؤن کے دوران کراچی واٹراینڈ سیوریج بورڈ کی کارکردگی ملک کے دیگراداروں کے مقابلے میں نمایاں اورقابل ستائش ہے ، کراچی کو دستیاب پانی کی واضح کمی کے باوجود گرمی کے موسم میں شہر میں فراہمی آب کی مجموعی صورتحال میں بہتری نے سندھ حکومت کی کارکردگی میں اضافہ کردیا ہے ، سیوریج کی شکایات کے ازالے کے لئے واٹربورڈ کی خودکار سیورکلیننگ اینڈجیٹنگ مشینیں اورعملہ مختلف علاقوں میں متحرک نظرآتا ہے ،جبکہ کمپلین سینٹر اور ادارے کی جانب سے تیارکردہ خصوصی ایپ کے ذریعے شہری لاک ڈاؤ ن کے دوران گھر بیٹھے فراہمی ونکاسی آب سے متعلق اپنی شکایات درج اور پانی کے ٹینکرز بک کرارہے ہیں ،دوسری لازمی سروسزایکٹ کے تحت ملک کے بڑے شہر کے پانی اور سیوریج کے مسائل حل کرنے والے ادارے کے ملازمین کو کرونا کی وباءسے بچاؤ کیلئے فیس ماسک ،سینی ٹائزرز ،صابن اور دستانوںکی فراہمی کے علاوہ میڈیکل کی سہولیات کی فراہمی نے ان کے حوصلے بلند کردیئے ہیں ،شہریوںں کے ساتھ ساتھ منتخب نمائندوں ،عمائدین شہر آئمہ مساجد ومنتظمین کی جانب سے بھی واٹربورڈ کی کارکردگی پر اطمینان کا اظہارکیا جارہا ہے ،تفصیلات کے مطابق شہر میں نافذ لاک ڈاؤن کے دوران واٹربورڈ نے اپنی محدود وسائل کا رونا رونے کے بجائے تسلی بخش کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے ،

ادارے کی مجموعی کارکردگی میں بہتری سے سندھ حکومت کو بھی شہریوں کو فراہمی ونکاسی آب کی سہولیات کی فراہمی کے حوالے سے اطمینان ہے ، واٹربورڈنے لاک ڈاؤن کے دوران شہریوں کے گھروں تک محدود ہونے کے باعث ان کے مسائل کے حل کیلئے جدید ٹیکنالوجی کا سہارالیتے ہوئے خصوصی ایپ متعارف کرائی ہے جس کے ذریعے شہری ہائیڈرنٹس پر لمبی لمبی لائنیں لگانے کے بجائے گھر بیٹھے پانی کے ٹینکرز سرکاری نرخ پر حاصل کرسکتے ہیں ، شہر میں قائم قرنطینہ سینٹروں کو یومیہ بنیادوں پر ہزاروں گیلن پانی کی فراہمی جاری ہے ، جبکہ بلند اور دور دراز ایسے علاقوں جہاں فراہمی آب کا نظام نہیں ہے میں ڈپٹی کمشنروں کے ذریعے مفت پانی فراہم کیاجارہاہے ، ایم ڈی واٹربورڈ اسداللہ خان سے ادارے کے ملازمین کے مسلسل رابطوں سے مسائل میں کمی جبکہ کارکردگی میں نمایاں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے،160سے زائد پمپنگ اسٹیشنز ،متعددفلٹرپلانٹس 11ہزارکلومیٹرطویل پائپنگ سسٹم4لاکھ سے زائد مین ہولز ،سیکڑوں مین سیور کا نظام چلانے کے لئے واٹربورڈ کے انجینئرز وافسران اپنے عملے کے ساتھ ہفتہ کے ساتوں دن 24گھنٹے مختلف شفٹوں میں پابندی سے اپنے فرائض سرانجام دے رہے ہیں،

دنیا کے بڑے شہروں کی صف کھڑے، کڑوڑوں کی آبادی والے شہر کانظا م فراہمی ونکاسی آب چلانے کیلئے باقاعدہ ایک میکینزم ہے جس کے تحت کسی بھی معاملے میں ایم ڈی سے لے کر لائن مین اور ہیلتھ ورکرز تک پیغام کی ترسیل یقینی بناکر واٹربورڈ نے خود کو ملک کے دیگر اداروں میں نمایاں کرلیاہے،واٹربورڈ نے موجودہ صورتحال میںاپنی ذمہ داری کا ادراک کرتے ہوئے،مزید برآں لاک ڈاؤن کے دوران ضرورت کے تحت گھروں سے نکلنے والے شہریوں خصوصاًشاہراہوںپر قائم ناکوںمیں طویل ڈیوٹی دینے والے قانون نافذ کرنے والے اداروں کو کرونا سے بچاؤ کیلئے ہاتھ دھونے کی سہولت جراثم کش کیمیکل وپھٹکری ملے پانی سے بھرے ٹینکروں کے ذریعے فراہم کی ہے ،جسے شہری حلقو ں ،مذہبی تنظیموں کی جانب سے سراہا گیا ہے، علاوہ ازیں واٹربورڈ کے منیجنگ ڈائریکٹراسداللہ خان نے ادارے کے ملازمین کی جانب سے کرونا سے بچاؤ کیلئے قائم سرکاری فنڈمیں 22ملین روپے کا عطیہ دے کردیگر اداروں کیلئے مثال بھی قائم کردی ہے ۔