آپ کیا سمجھتے ہیں کہ دودھ کے دوکاندار آپ کے مخالف ہیں یا ساتھی؟

ڈیری فارمرز/ڈیری فارمرز ایسوسی ایشن کے نام دوکانداروں/ریٹیلرز ایسوسی ایشن کا کھلا خط
محترم ڈیری فارمرز السلام علیکم!
آپ کیا سمجھتے ہیں کہ دودھ کے دوکاندار آپ کے مخالف ہیں یا ساتھی؟
یقینا دودھ کا دوکاندار آپ کا ساتھی ہے جس نے ہمیشہ ڈیری فارمرز کی خوشحالی کو اپنی خوشحالی قرار دیا اور ہر پلیٹ فارم پر ڈیری فارمرز کو پھل دار درخت سے تشبیہ دی جس کا پھل ساری صنعت کھا رہی ہے ہر پلیٹ فارم پر دودھ کے پیداواری اخراجات کی بھر پور حمایت کی اور اس معاملہ میں کبھی ڈیری فارمرز کی مخالفت نہیں کی ۔
لیکن یہ بھی حقیقت ہے کہ ڈیری فارمرز کی ایک دوسری ایسوسی ایشن نے متعدد بار دوکانداروں کی حوصلہ شکنی کی ہے اور میڈیا پر بیٹھ کر پانی کی ملاوٹ اور کبھی مصنوعی دودھ کی تیاری کے الزامات لگائے اور کبھی ریٹ کے بارے میں کنفیوژن پیدا کی اور حالیہ دنوں میں اپنی ایسوسی ایشن کا نام استعمال کر کے دودھ کے اس ریٹ کو خراب کیا جو کہ دوکانداروں نے اپنی عزت نفس داو پر لگا کر اور کروڑوں کے جرمانے اور سزائیں جھیل کر چلایا تھا اور اس کی بڑی بھاری قیمت ادا کی تھی ۔
لیکن آپ نے اپنے دعوے کے مطابق دوکانداروں کے شانہ بشانہ کھڑے ہونے اور ان کا ساتھ دینا تو درکنار، کبھی ان تخریبی عناصر کی مذمت تک نہیں کی جبکہ اسی ریٹ کی پاداش میں ہمارے خلاف توہین عدالت کا کیس ابھی بھی چل رہا ہے ۔
دیگر آپ نے اپنے اس ریٹ کو نوٹیفائیڈ کروانے کے لئے انتظامیہ یا عدالت کے ذریعے کوئی سنجیدہ کوشش نہیں کی جو کہ بہرحال آپ کی بنیادی ذمہ داری ہے اور ابھی آنے والے رمضان میں معلوم نہیں دوکانداروں کا کیا حشر ہو گا ۔

آخری بات،
گزشتہ دہائیوں میں ہر سال کتنی مرتبہ مندی آتی رہی ،ہڑتالیں، موسم کی خرابیاں اور ہر قسم کی مشکلات کا سامنا دوکانداروں نے کیا لیکن کبھی رعایت، نقصان میں شراکت یا عبوری ریٹ جیسے معاملات نہیں اٹھائے لیکن حالیہ وبائی صورتحال نے دوکانداروں کی کمر توڑ کر رکھ دی ہے اور ہر دوکاندار روزانہ کی بنیاد پر ہزاروں روپے کا مقروض ہو رہا ہے اور نقصان کے ساتھ ساتھ ایک ڈیری ایسوسی ایشن کی عاقبت نا اندیشی کی وجہ اپنے گاہکوں اور میڈیا اور انتظامیہ سے ریٹ کے معاملے میں الجھ کر رہ گیا ہے ایسے میں حیدرآباد کی ڈیری فارمرز ایسوسی ایشن اور ہول سیلرز حضرات نے قابل ستائش فیصلہ کرتے ہوئے 600 روپے فی من کمی کا اعلان کیا ہے اسی طرح سپر ہائی وے / میمن گوٹھ /خوجہ کمیونٹی اور دیگر نے بھی دوکانداروں کو ریلیف دینےکا فیصلہ کیا ہے جو کہ حوصلہ افزا پیش رفت ہےلیکن دوکاندار اپنی حلیف ،کراچی ڈیری فارمرز ایسوسی ایشن یعنی حاجی اختر گجر کی جانب سے بطور یکجہتی کسی اچھے پیکیج کے منتظر ہیں تا کہ اس دیوالیہ ہوتی معاشی بحران سے نکلا جا سکے اور دودھ کی صنعت بھی کسی حادثے سے محفوظ رہے ۔شکریہ ۔اللہ تعالی ہم سب کا حامی و ناصر ہو اور ہمارے روزگار کی حفاظت فرمائے، آمیین۔
آل کراچی ملک ریٹیلرز ویلفیئر ایسوسی ایشن