سپریم کورٹ کے فیصلے کےپابند ہیں،کنفیوژن پیدا کرنے کی بجائے سپریم کورٹ کے فیصلوں کا احترام کرتے ہوئےیہ فیصلہ واپس لیاجائے۔

کاشف مرزا صدرآل پاکستان پرائیویٹ سکولز فیڈریشن نےفیس بارےپنجاب حکومت کےفیصلہ کوآئین و قانون سے متصادم قرار دیتے ہوئےکہا کہ ہم فیس بارےسپریم کورٹ کے فیصلے کےپابند ہیں،کنفیوژن پیدا کرنے کی بجائے سپریم کورٹ کے فیصلوں کا احترام کرتے ہوئےیہ فیصلہ واپس لیاجائے۔وزیراعظم اور چیف جسٹس دادرسی کریں۔صدر پرائیویٹ اسکولزفیڈریشن کاشف مرزا نے کہا کہ ٹیچرز کی تنخواہیں فکس ہیں اورملک بھر میں 90 فیصد اسکول عمارتیں کرائے پر ہیں۔آل پاکستان پرائیویٹ سکولز فیڈریشن نے ملکی حالات کے پیش نظر وزیر اعظم پاکستان سے پرائیویٹ سکولزکے لیے ’’تعلیمی ریلیف پیکیج ‘‘ کی استدعا کردی ہے۔ کاشف مرزا نےمزید کہا کہ انسانیت کے جذبہ کے تحت اور کورنٹائیں سے نبٹنے کے لیے ملک بھرکےمستحق طلبا کی فیس ادائیگی کے لیے 5کروڑ روپے سے کرونا ایجوکیشنل ریلیف فنڈقائم کر دیاہے۔وزیر اعظم پاکستان اور صوبائی وزراءاعلی کوملک بھر کے2لاکھ پرائیویٹ سکولزمیں لاک ڈاؤن کے دوران آئسولیشن اور قرنطینہ سنٹرز بنانیں اور 15 لاکھ ٹیچرز بطور والیئنٹیرزپیشکش بھی کر دی گئی۔لہٰذااس بحرانی کیفیت میں حکومت تدریسی و غیر تدریسی سٹاف کی تنخواہیں اور بلڈنگزکے کرایے ادا کرکے نجی سکولز کی حوصلہ افزائی کرےاور حکومت اس مشکل گھڑی میں ہمارے مسائل کو سمجھتے ہوئے ہوئے ملکی مفاد میں اہم فیصلے صادر فرمائیں گے۔

سیکرٹری اطلاعات آل پاکستان پرائیویٹ سکولز فیڈریشن

اپنا تبصرہ بھیجیں