پی آئی اے کے پائلٹوں کے جہاز اڑانے سے انکار کی اندرونی کہانی سامنے آگئی

پاکستان ایئرلائن ( پی آئی اے ) کے سی ای او نے کراچی سے فضائی آپریشن معطل کرنے کے احکامات جاری کردیے۔ ایک بیان میں سی ای او ایئر مارشل ارشد نے کہا ہے کہ کراچی ایئرپورٹ پر پیش آنے والا واقعہ عملے سے متعلق حکومت پاکستان کی ہدایات کے منافی ہے۔ انہوں نے کہا کہ خالی جہاز لندن سے واپس آنے سے 3 گھنٹے قبل تمام حکام کو اطلاع کردی گئی تھی۔ سی ای او پی آئی اے نے مزید کہا کہ ہدایات کے باوجود محکمہ صحت سندھ کے عملے نے کپتانوں کو زبردستی قرنطینہ کرنے پر اصرار کیا۔ ترجمان پی آئی اے عبداللّٰہ خان نے کہا کہ فضائی عملے میں کورونا وائرس کی موجودگی کی اطلاعات گمراہ کن ہیں۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ تورکی سے پاکستانیوں کو لے کر پاکستان آنے والے جہاز میں اسپرے نہیں کیا گیا جس پر پائلٹ اور عملے نے احتجاج بھی کیا اور دیگر جہازوں میں بھی حفاظتی اقدامات اختیار نہ کیے جانے کی وجہ سے صورت حال کو تشویشناک قرار دیا جس پر پائلٹوں کی تنظیم پال پانے پائلٹوں کو جھازنہ اڑانے کے لئے کہا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں