دل کی بات

دل کی بات ہے اچھا ہے کر لیتے ہیں 
دل کی بات ہے اچھا ہے کرلیتے ہیں
آجکل ہم کرونا سے ہی ڈرتے رہتے ہیں 
سچ ہے آج کل ہم کرونا سے ہی ڈرتے رہتے ہیں 
اللہ کو یاد کرتے ہیں ہر گھڑی فریاد کرتے ہیں 
معافی کے طلب گار ہیں اللہ کا نام لیتے ہیں
معافی کے طلب گار ہیں اللہ کا نام لیتے ہیں 
پر دکھاوے سے باز نہیں سوشل میڈیا پر ہی ڈال دیتے ہیں 
راشن بانٹا تو دل کو چین نہیں آیا 
تصویر لگائی انسٹاگرام پے۔پر وائرل کا مزہ نہیں آیا 
مدد اور عبادت کے لیے ضرور ی ہے کیا تشہیر کرنا
انسانوں کی واہ واہ سننا جھوٹی شان سننا 
کبھی خاموشی کا لطف بھی اٹھاؤ 
کبھی خاموشی کا لطف بھی اٹھاؤ 
صرف رب کی خاطر اعمال نبھاؤ
پھر دیکھو وہ لذت وہ راحت 
دل میں سکون کی شیرینی اور فراست 
یہ وقت یقینا ایسا ہی وقت ہے 
اپنے اندر جھانکنے میں کیوں دقت ہے
احساس احترام اور خودداری
کب سمجھیں گے ہم
آخر کب ہوگی ہماری بیداری
کب ہوگی ہماری بیداری
…….نصرت حارث

اپنا تبصرہ بھیجیں