انسانوں کی بھوک کا بروقت علاج نہ ہوا تو پاکستان اور بھارت میں کوئی انسانی المیہ جنم لے سکتا ہے

انسانوں کی بھوک کا بروقت علاج نہ ہوا تو پاکستان اور بھارت میں کوئی انسانی المیہ جنم لے سکتا ہے۔
کئی خبریں اس وقت دل دہلارہی ہیں۔
مثلا بھارت میں لاک ڈاؤن کی وجہ سے بےروزگاری اور کاروبار کے بند ہونے سے لاکھوں لوگ گھروں سے نکل کر پناہیں اور غذا ڈھونڈنے نکل پڑے ہیں۔ اٹلی اسپین اور فرانس میں ہزاروں کی جانیں چلی گئیں، امریکہ میں لاکھوں بیمار ہیں
یہاں راشن روٹی کے لئے لوگ در بدر ہیں اس طرح تو صرف کرونا نہیں مفلسی سے لوگ مر جائیں گے
مختلف جگہ لوگ بھگدڑ میں مر گئے۔
مجھے آج تمام نفوس عالم کے لئے اللہ کے سامنے کھڑے ہوکر انسان کی وکالت کرنا ہے۔
میرا دل اس وقت انسانوں کے لئے پریشان ہےچاہے وہ انڈیا کے ہندو اور بدھ مت کے پیروکار ہوں یا امریکہ کے عیسائی یا کوئی اور
ہم انسان ہیں ہمیں اللہ کے سامنے انسان کی نمائندگی کرنی ہوگی انسان کی مشکلات جو نظر آرہی ہیں مگر افسوس ہم اب بھی مذہب کے نام پر انسانوں کے نہیں خدا کے نمائندے بنے ہوئے ہیں کہیں شیعہ کہیں تبلیغی کہیں ہندو تو کہیں مسلم ۔۔۔۔اسی لیے انسان کی وکالت کا کاروبار انسانیت کے نام پر ملحدوں اور خدا بیزار لوگوں نے سنبھال لیا ہے میں آج کل دکھ درد کے جو قصے اپنی آنکھوں سے دیکھ رہی ہوں اپنے آنسو نہیں روک سکی ہوں۔
اقبال جو اللہ کا عاشق ہے
مگر انسان کا وکیل بن کر خدا کے سامنے کھڑا ہے۔ مجھے بھی ایسا عاشق بننا ہے

خدا کے بندے تو ہیں ہزاروں ، بنوں میں پھرتے ہیں مارے مارے
میں اس کا بندہ بنوں گا جس کو خدا کے بندوں سے پیار ہوگا۔

(نادیہ فاروق)

اپنا تبصرہ بھیجیں