دوستو کرونا پاکستان میں آ چکا ہے لیکن اپ ایک بات یاد رکھ لیں کے یہ وائرس اتنا بھی خطرناک نہیں جتنا میڈیا نے اس کو بنا ڈالا ہے

دوستو کرونا پاکستان میں آ چکا ہے لیکن اپ ایک بات یاد رکھ لیں کے یہ وائرس اتنا بھی خطرناک نہیں جتنا میڈیا نے اس کو بنا ڈالا ہے، اکثر ماہرین کہتے ہیں کے کرونا، فلو سے بھی کم خطرناک وائرس ہے، کرونا کی ہلاکت خیزی کو دیکھا جائے تو اس میں مبتلا ہونے والے 100 مریضوں میں سے 97 ٹھیک ھو جاتے ہیں اس وائرس سے اصل خطرہ چھوٹے بچوں یا بوڑھے افراد کو زیادہ ہے کیوں کے بچوں اور بوڑھوں میں قوت مدافعیت بہت کم ہوتی ہے نوجوان یا صحت مند افراد کو اس سے خطرہ نا ہونے کے برابر ہے،
حقیقت یہ ہے کے میڈیا نے عوام کو نفسیاتی بنا ڈالا ہے اب جس انسان کے ذہن میں یہ بات بیٹھ جائے کے کرونا انسان کو مار کر ھی چھوڑتا ہے تو جب اس کو کرونا چپکے گا یقیناً وہ سوچ سوچ کر ھی مر جائے گا،
اپ نے زکا وائرس کا نام سن رکھا ھو گا جب یہ دنیا میں آیا تھا تو اس سے اموات نا ہونے کے برابر تھیں لیکن میڈیا نے ڈرا ڈرا کر دنیا بھر کے عوام کو خوفزدہ کردیا تھا
یاد رکھیں ہیپاٹائٹس، کینسر، ٹائیفائڈ، اور دوسری بیماریاں جو ہمارے معاشرے میں عام ہیں ان سے لاکھوں اموات ہورہی ہیں اور کرونا ہلاکت خیزی میں ان بیماریوں کا بچہ لگتا ہے، لہذا صرف احتیاط کریں، ہر تھوڑی دیر بعد تھوڑا سا پانی پی لیں تاکہ اگر کرونا اپ کے منہ میں گس بھی گیا ہے تو وہ اپ کے گلے میں پکڑ نا بنا سکے اور پانی پینے کی وجہ سے سلپ ھو کر اپ کے معدے تک پہنچ جائے جب کوئی وائرس انسان کے معدے میں جا پہنچتا ہے تو انسان کا معدہ اس کو مار ڈالتا ہے، فیس ماسک یوز کریں لیکن آج کل حسب معمول فیس ماسک شارٹ ھو گئے ہیں اس لیے کوئی رومال وغیرہ منہ پر لپیٹ کر باہر رش والی جگہوں پر نکلیں، کچھ بھی کھانے سے پہلے ہاتھ دھویں، اور باقی اللہ‎ پر چھوڑ دیں، انشاءلله کچھ بھی نہیں ہونا.
کوئی کنفیوزن ھو تو اپنے ڈاکٹر سے ضرور مشورہ کریں
dr-shafqat-abbasi-

اپنا تبصرہ بھیجیں