ر قائد پر رقص کیے جانے کا معاملہ، ٹک ٹاک ویڈیو بنانے والا گروپ گرفتار کر لیا گیا پولیس کے مطابق گروپ کو اسد نامی نوجوان چلاتا ہے، یہ گروپ مزار قائد پرٹک ٹاک ویڈیوز بنا کر سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کرتا تھا

مزار قائد پر رقص کیے جانے کا معاملہ، ٹک ٹاک ویڈیو بنانے والا گروپ گرفتار کر لیا گیا، پولیس کے مطابق گروپ کو اسد نامی نوجوان چلاتا ہے، یہ گروپ مزار قائد پرٹک ٹاک ویڈیوز بنا کر سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کرتا تھا۔ تفصیلات کے مطابق بتایا گیا ہے کہ مزار قائد پر ٹک ٹاک ویڈیوز بنانے والے مبینہ ملزم اسد سمیت دیگر ملزمان کو گرفتار کر لیا گیا۔
کراچی میں مزار قائد کے مینجمنٹ بورڈ نے معاملے کا معلوم ہونے پر ایکشن لیتے ہوئے مزار پر ٹک ٹاک ویڈیوز بنانے والے گروہ کو گرفتار کر لیا۔ سیکورٹی نے مبینہ ملزم اسد اور دیگرملزمان کو گرفتار کر کے پولیس کے حوالے کر دیا۔ مبینہ ملزمان مزار قائد پرٹک ٹاک ویڈیوز بنا کر سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کرتے تھے۔
واضح رہے کہ 2 روز قبل سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہوئی تھی جس میں لڑکی مزار قائد کے سامنے سنگ مرمر سے بنے فرش پر رقص کر رہی تھی تاہم لڑکی کے چہرے پر نقاب ہونے کے باعث اس کی شکل نظر نہیں آ رہی۔

سفید لباس میں ملبوس نقاب پوش لڑکی کی مختلف ویڈیوز وائرل ہوئی ہیں جن میں وہ مزار قائد کے احاطے میں ٹک ٹاک کے دوران محو رقص ہے،عکس بند کی جانے والی ویڈیوزمیں مختلف گانے بھی سنائی دے رہے ہیں۔ ویڈیو کی فلم بندی کے دوران عقب میں شہری بھی موجود تھے۔ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد شہریوں کی جانب سے شدید تنقید کی گئی تھی شہریوں کا کہنا تھا کہ اس عمل کے ذریعے مزار قائد کے تقدس کو پامال کیا گیا۔
شہریوں کے مطابق عام طور پر فلمبند کی جانے والی ویڈیوز کا معاملہ اس قدر سنگین صورتحال اختیار کرگیا ہے کہ اس میں اب بانی پاکستان کے مزار کو بھی نہیں بخشا گیا جو کہ ایک افسوسناک پہلو ہے۔ جبکہ دوسری جانب سوشل میڈیا پر موجود مواد کو ہٹانے اور اس معاملے کی تحقیقات کے لیے مزار قائد انتظامیہ نے ایف آئی اے سے درخواست کرنے کا فیصلہ کیا ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں