پاکستان اور چین اس وقت مشکل حالات سے گزر رہے ہیں، پاکستان نے چین سے اپنے طلباء کو واپس نہ بلانے کا ایک مشکل لیکن بہترین فیصلہ کیا ہے : چینی قونصل جنرل لی بی جیان

کراچی : کراچی میں تعینات چین کے قونصل جنرل لی بی جیان نے کہا ہے کہ پاکستان اور چین اس وقت مشکل حالات سے گزر رہے ہیں ۔پاکستان نے چین سے اپنے طلباء کو واپس نہ بلانے کا ایک مشکل لیکن بہترین فیصلہ کیا ہے ۔کورونا وائرس سے چین کے صرف دو شہر متاثر ہوئے ہیں ۔یہ وائرس اب ہمارے کنٹرول میں ہے ۔چین میں موجود پاکستانیوں کی بھرپور دیکھ بھال کی جارہی ہے ۔سی پیک سے متعلق پالیسی میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ہے ۔یہ منصوبہ دوسرے مرحلے سے گزر رہا ہے ۔ہم متعلقہ علاقوں کے لوگوں کو بہتر سہولیات فراہم کررہے ہیں ۔ہم اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق مسئلہ کشمیر کا حل چاہتے ہیں ۔چین میں مسلما ن بالکل محفوظ ہیں اور ان کی فلاح بہبود کے لیے اقدامات کیے جارہے ہیں ۔نت نئے چیلنجز سے نمٹنے کے لئے ہمیں تیار ہونا چائیے۔حکومت پاکستان ملک میں رہنے والوں کو بہتر رزگار اور معیار زندگی بلند کرنے کے لیے اقدامات کرے۔ہم پاکستان کا ہر موڑ پر ساتھ دیں گے۔ان خیالات کا اظہار انہوںنے جمعرات کو کراچی پریس کلب میں میٹ دی پریس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔تقریب سے کراچی پریس کلب کے صدر امتیاز خان فاران ،جنرل سیکرٹری ارمان صابر نے بھی خطاب کیا ۔انہوںنے کہا کہ کراچی کا موسم بہت شاندار اور دلکش ہے ۔یہاں کے کھانے نہایت لذیز ہیں ۔سموسہ کھاکر مجھے بہت اچھا لگتا ہے۔کراچی پریس کلب کے نومنتخب عہدیداروں کو مبارکبا د پیش کرتا ہوں ۔پاکستان میں صحافیوں کو بہت سی مشکلات درپیش ہیں ۔میڈیا نے دونوں ممالک کی دوستی کو بہت سپورٹ کیا ہے ۔ ہم صحافیوں کو وہاں آنے کی دعوت دیتے ہیں اور یہ تبادلہ دونوں طرف سے ہونا چاہیے ۔کراچی پریس کلب کو دعوت دیتا ہوں کہ وہ اپنا وفد چین بھیجے ۔

انہوں نے کہاکہ چین میں کورونا وائرس سے ہزاروں لوگ متاثر ہوئے ہیں ۔ہزاروں افراد کے ٹیسٹ سیمپلز لئے گئے ہیں ۔ یہ وائرس اب ہمارے کنٹرول میں ہے ۔اس کے متعلق بہت سی معلومات مل چکی ہیں ۔ ہم وائرس سے نمٹنے کے لئے ہر ممکن اقدامات کرہے ہیں۔چین کے متعد شہروں میں رہنے والے مکمل طور پر محفوظ ہیں اور وہاں کوئی بھی اس مرض کی زد میں نہیں آیا ہے۔اگر یہ وائرس پھیل جاتا تو صورت حال خراب ہوسکتی تھی ۔انہوںنے کہا کہ پاکستانی نوجوانوں کی ایک بڑی تعداد چین میں تعلیم حاصل کررہی ہے ۔حکومت چین نے تمام پاکستانیوں کو حفاظتی اشیا فراہم کی ہیں اور ان کی مکمل دیکھ بھال کی جارہی ہے ۔انہوںنے کہا کہ کراچی میں بھی گیس کے اخراج کی وجہ سے 400سے زائد افراد متاثر ہوئے ہیں ۔ہم اس صورت حال میں پاکستان کی بھرپور مدد کے لیے تیار ہیں ۔یہ ایک دوسرے کا ہاتھ تھامنے کا وقت ہے ۔لی بی جیان نے کہا کہ چین معاشی طور پر ایک بڑا ملک ہے ۔ہماری انڈسٹری ملک کو ترقی کی جانب گامزن کرنے کی جدوجہد کررہی ہے ۔پاکستان کی حکومت کو بھی معاشی ترقی کے لیے اقدامات اٹھانے ہوںگے ۔پاکستان کو معاشی طور پر دوبارہ کھڑا کرنا حکومت وقت کی ذمہ داری ہے ۔انہوںنے کہا کہ دنیا بدل رہی ہے ۔ہمیںنت نئے چیلنجز سے نمٹنے کے لئے تیار ہونا چائیے۔حکومت ملک میں رہنے والوں کو بہتر رزگار اور مزید بہتر زندگی کی فراہمی کے لئے اقدامات اٹھائے۔ہم پاکستان کا ہر موڑ پر ساتھ دیں گے ۔ایک سوال کے جواب میں چین کے قونصل جنرل نے کہا کہ چین میں مسلمان بالکل محفوظ ہیں ۔مسلمانوں کی تربیت کے لیے اہم کام کررہے ہیں تاکہ وہ اچھی زندگی بسر کرسکیں ۔کچھ مسلمان انتہاء پسندی کی طرف مائل ہوگئے تھے انہیں ہم قومی دھارے میں واپس لے کر آئے ہیں ۔ایف ٹی اے کے حوالے سے لی بی جیان نے کہاکہ مختلف اشیاء کے ٹیکس کے معاملات کو دیکھنا ہوگا ۔اس معاہدے سے بزنس کمیونٹی کو فائدہ ہوگا ۔چین ایک بڑی مارکیٹ ہے ۔

ہم پاکستان کی بزنس کمیونٹی کی بھرپور مدد کررہے ہیں ۔انہوںنے کہا کہ سی پیک کے حوالے سے تحریک انصاف کی حکومت نے کوئی پالیسی تبدیل نہیں کی ہے ۔ہم سی پیک سے متعلقہ علاقوں کے لوگوں کو بہتر سہولیات فرارہم کررہے ہیں ۔ان علاقوں کے لوگوں کو روزگار کی فراہمی کے لیے بھی اقدامات کیے جارہے ہیں ۔ہماری توجہ ایف ٹی اے پر ہے ۔ہماری توجہ ایف ٹی اے پر ہے ۔پاکستان اب بہت سی چیزیں چین سے منگواسکتا ہے جو کہ نہایت منافع بخش اور سستی ہوں گی ۔ایف ٹی اے سے5 س6 بلین کا فائدہ ہوگا۔اپریل تک پاکستان کے معاشی حالات بہتر ہوتے دکھائی دے رہے ہیں ۔انہوںنے کہا کہ گوادر کامستقبل میں ایک الگ مقام ہوگا۔گوادر اور گرد نواح کے علاقوں میں صاف پانی پہنچانا ہمارا مقصد ہے۔ان کی بہتر زندگی کے لئے مزید اقدامات کرنے ہونگے ۔ لی بی جیان نے کہا کہ کراچی سرکلر ریلوے کی بحالی ایک اچھا اقدام ہے ۔اس سے کثیر آبادی کو ٹرانسپورٹ کی بہترین سہولیات فراہم ہوں گی ۔اس موقع پر صدر کراچی پریس کلب امتیاز فاران نے کہا کہ دنیا پاکستان اور چین کی دوستی کی مثالی دیتی ہے۔دونوں ممالک نے ہر دور میں ایک دوسرے کو سپورٹ کیا ہے ۔چین نے ہمارے نوجونوں کو روزگار کے متعدد مواقع دیئے ۔چین کے خلاف کرونا وائرس سے متعلق پروپیگنڈاکیا جارہا ہے جس کی ہم مذمت کرتے ہیں ۔سیکرٹری کراچی پریس کلب ارمان صابر نے کہا کہ کراچی پریس کلب میں مہمانوں کو خوش آمدید کہتے ہیں ۔کراچی پریس کلب ایک تاریخ رکھتا ہے ۔ایم آر ڈی تحریک کی ابتدا کراچی پریس کلب سے کی گئی تھی۔کراچی پریس کلب نے آمروں کا سامنا کیا۔ہم آ ج بھی آزادی صحافت کے لیے جدوجہد کرہے ہیں۔پروگرام کے آخر میں کراچی پریس کلب کے صدر امتیاز فاران سیکریٹری ارمان صابر نے مہمانوں کو سندھی اجرک و ٹوپی کا تحفہ میں پیش کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں