اگر حالات ٹھیک نہ ہوئے تو وطن عزیز کو ناقابل تلافی نقصان پہنچے گا۔ہمیں اس کی قیمت ادا کرنی پڑے گی

مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنماء خواجہ آصف نے کہا ہے کہ ہوسکتا ہے کہ فواد چودھری اگلا الیکشن پیپلزپارٹی کے ٹکٹ پر لڑیں، میرا وزیرعظم بننے کا کوئی ایجنڈا نہیں ہے،مجھے ایسی کوئی خواہش نہیں، اللہ کرے ہماری جماعت پھر اقتدار میں آئے تو صرف قوم کی خدمت کروں گا۔ انہوں نے نجی ٹی وی کے پروگرام میں تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ مجھے قطعی طور پر علم نہیں کہ کیا کوئی ڈیل ہورہی ہے، میں تو سیاسی ورکر ہونے کی حیثیت سے جو معلوم ہوتا ہے بتا دیتا ہوں۔
اگر حالات ٹھیک نہ ہوئے تو وطن عزیز کو ناقابل تلافی نقصان پہنچے گا۔ہمیں اس کی قیمت ادا کرنی پڑے گی۔مہنگائی گلی محلوں میں دندناتی پھر رہی ہے، ہر کسی کوکھائے جارہی ہے۔ میں نے اسپیکر سے درخواست کی تھی کہ عمران خان کی تقاریر نعرے سب چلائے جائیں۔تاکہ تبدیلی کے دیوانے سب کچھ دیکھ لیں۔ انہوں نے کہا کہ میں کسی سازش یا ڈیل کی خوشبو نہیں سونگھ رہا، میری خواہش ہے کہ حکمرانوں کے بارے لوگوں کے ذہنوں میں رتی برابر بھی شک نہ رہے کہ یہ کتنے نااہل ہیں، ان حکمرانوں کے ڈی این اے میں کرپٹ ہے۔

انہوں نے کہا کہ میرا وزیرعظم بننے کا کوئی ایجنڈا نہیں ہے، اللہ کرے ہماری جماعت پھر اقتدار میں آئے تو قوم کی خدمت کروں گا۔مجھے اللہ نے ان خواہشات سے آزاد کیا ہوا ہے۔ ہوسکتا ہے کہ فواد چودھری اگلا الیکشن پیپلزپارٹی کے ٹکٹ پر لڑیں۔انہوں نے کہا کہ کابینہ نے آج سے تین چار مہینے پہلے فیصلہ کیا تھا کہ میرے خلاف ایف آئی اے تحقیقات کرے۔
میں ایک سیاسی کارکن ہوں ، مجھ پر اگر غداری کا مقدمہ بنتا ہے ، میرے والد پر بھی ایوب خان کے دور میں مقدمہ بنا تھا۔میرے والد فاطمہ جناح کے ساتھ تھے، ایوب خان نے کہا کہ فاطمہ جناح انڈین ایجنٹ ہے۔1958ء سے پہلے کسی کے خلاف کرپشن کا کوئی الزام نہیں تھا۔ایوب خان کے دور میں کرپشن کے الزامات لگنا شروع ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ ایسے مقدمات میرے لیے فخر کی بات ہیں،مجھے ایسی حکومت سے کوئی سرٹیفکیٹ نہیں چاہیے جنہوں نے ملک کو تباہ کردیا۔مجھے ایف آئی اے نے تین چار ماہ قبل بلایاتھا، سوالنامہ بھی دیا،میں نے کہا کہ یہ سوالنامہ اس پٹیشن کا حصہ تھے جس میں سپریم کورٹ کا میرے حق میں فیصلہ آیا ہے۔ سوداگروں پر سیاست کے دروازے بند نہ ہوئے تو یہ کسی کوبھی بیچ سکتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں