فزیکل ایجوکیشن سندھ کا پہلا نصاب متعارف : سیکریٹری تعلیم خالد حیدر شاہ، رائٹ ٹو پلے کے اقبال جتوئی اور دیگر کا خطاب

کرا چی  : صوبائی سیکریٹری اسکولز ایجو کیشن حکومت سندھ خالد حیدر شاہ نے آج مقامی ہوٹل میں محکمہ تعلیم و خواندگی رائیٹ ٹو پلے کے تعاون سے اسکولوں میں فزیکل ایجوکیشن کے نصاب کو رائج کرنے کے سلسلے میں تعلیم سے وابستہ افراد ،سول سوسائٹی مختلف غیر سرکاری تنظیموں اور ماہرین پر مشتمل ایک تعارفی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے حکومت سندھ کی جانب سے اس نصاب کو وقت پر دی گئی سفارشات کی روشنی میں عمل درآمد کرانے کے لیے بھرپور تعاون کا یقین دلاتے ہوئے کہا کہ رائٹ ٹو پلے نے سندھ حکومت کے ساتھ سندھ کا پہلا اور جدید نوعیت پر ایک نصاب ہو تمام اسٹیک ہولڈرز کے تعاون اور شراکت سے قابل عمل بنایا ہے جو کہ خوش آئند ہے۔اس سے سندھ کے اسکولوں میں طلبا و طالبات کو فزیکل ایجوکیشن کے سلسلے میں جدید تقاضوں کے عین مطابق تعلیم کے ساتھ کھیلوں کی سرگرمیوں کو مزید فروغ دینے میں اپنا موثر کردار ادا کر سکیں گے۔صوبائی سیکریٹری تعلیم سید خالد حیدرشاہ نے مزید کہا کہ حکومت سندھ نے اس شعبے کی اہمیت اور افادیت کو مدنظر رکھتے ہوئے رائٹ ٹو پلے کے تعاون سے اس پر عملی کام شروع کیا ہے اور میرے سابق سیکریٹری تعلیم قاضی شاہد پرویز نے ایک یادداشت کے معاہدے پر دستخط کیے اور اس میں بچوں کو فزیکل ایجوکیشن کے شعبے میں تعلیم کے ساتھ دیگر غیر نصابی سرگرمیوں میں بھرپور حصہ لینے کے مواقع فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ ان کی تربیت زندگی کے ہنر اور ان کو ان کی صلاحیتوں کے مطابق اجاگر کرنے کے لیے کئی اقدامات شامل ہیں۔اور نہ صرف ان کی صلاحیتیں بکھرے گی بلکہ تعلیم و غیر نصابی ا تعداد میں بھی اضافہ ہوگا اور وہ معاشرے میں کا میا ب انسا ن کے طو ر پر اپنا بھرپور کردار بھی ادا کرنے میں کامیاب انسان کے طور پر ابھر کر سامنے آئیں گے۔

صوبائی سیکریٹری نے اس نصاب کی تشکیل پر ڈاکٹر فوزیہ، اصغر میمن، نوراحمد کھو سودویگر کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ اس نصاب کی سندھی اردو ترجمہ کے ساتھ بہت جلد اسکولوں میں پروگرام شروع کیا جائیگا۔قبل ازیں پلے ٹو رائٹ کے کنٹری ہیڈ ڈاکٹر اقبال جتو ئی نے سندھ حکومت کی کاوشوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ اس پروگرام کے ذر یعے 2 لاکھ 60 ہزار سے زائد طلبہ وطالبات کی مختلف صحت مند سرگرمیوں میں شامل کیا گیا اور مشق کرائی گئی جس کا مقصد طلبا سے ذہنی دباو ¿ میں کمی، غیر نصاب استعداد میں اضافہ اور انہیں صحت مند ماحول فراہم کرنا ہے تاکہ وہ اپنی صلاحیتوں کو دبانے کے بجائے اس کا بھرپور استعمال کریں۔اس نصاب کی ترتیب تمام اسٹیک ہولڈرز کی دن رات محنت کا ثمر ہے۔انہوں نے محکمہ تعلیم حکومت سندھ کی پوری ٹیم کو سراہتے ہوئے کہا کہ محکمہ تعلیم کا یہ نصاب اسکولوں میں جلد رائج کردیا جائے گا۔ اس سے نہ صرف اسکولوں میں بچوں کی تعداد میں اضا فے کا سبب بنے گا بلکہ انہیں اسکولو ں میں مستقل طو ر پر رکھنے اور انہیں غیرنصابی سر گر میو ں کے ذریعے صلا حیتو ں میں اضا فے کا سبب بنے گا۔تقریب سے آر ایس یو کے چیف پروگرام مینیجر حنیف چنا، ڈائریکٹر کیریکولم اصغر میمن ،ایڈیشنل سیکریٹری چیف ایڈوائزرز ڈاکٹر فوزیہ، ڈاکٹر غزالہ، لا لہ رخ رفیع نے نصاب کی تشکیل، ریسرچ ،عملی اقدامات کے با ر ے میں بھی آگاہی فرا ہم کی۔ مختلف شرکاءنے اپنی سفارشات بھی دی اور اس اقدام کو سراہتے ہوئے سندھ حکومت اور پلے ٹو رائٹ کے اقدامات کو سراہا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں