وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کا تغلق ہاؤس (پرانا سیکرٹریٹ) میں مختلف سکریٹریوں کے دفاتر کا اچانک دورہ

کراچی : وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے پیر کی صبح تقریبا دس بجے تغلق ہاؤس (پرانا سیکرٹریٹ) میں مختلف سکریٹریوں کے دفاتر کا اچانک دورہ کیا جہاں افسران اور عملے کی حاضری کی چیک کی۔ انہوں نے اپنے دورے کا آغاز محکمہ داخلہ سے کیا جہاں سیکریٹری سمیت تمام افسران غیرحاضر تھے۔ وزیر اعلیٰ سندھ نے برہمی کا اظہار کیا۔ سیکرٹری برائے داخلہ نے وزیر اعلیٰ سندھ کو بتایا کہ سکریٹری ایک کیس کے سلسلے میں عدالت گئے ہیں۔ اس پر وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا کہ سیکرٹری موجود نہیں تو باقی عملہ کہاں ہے۔ انہوں نے کہا تقریبا تمام ایڈیشنل سیکرٹریز ، ڈپٹی سیکرٹریز اور سیکشن افسران غیر حاضر ہیں اور انہوں نے اپنے پرنسپل سکریٹری کو ہدایت کی کہ وہ ہوم سکریٹری سے رپورٹ طلب کریں۔جب وزیر اعلیٰ سندھ نے محکمہ زراعت کے دفتر کا دورہ کیا تو سیکرٹری زراعت سمیت تقریبا تمام عملہ غیر حاضر تھا، انھوں نے شدید ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے محکمہ کے ایک دفتر سے دوسرے دفتر چلا گئے اور ان میں سے بیشتر غیر حاضر پائے گئے۔ انہوں نے اس سلسلے میں محکمہ سے ایک رپورٹ طلب کی ہےکہ وہ کیو غیر حاضر تھے۔ انہوں نے تغلق ہاؤس میں محکمہ لیبر ، ٹرانسپورٹ اور آبپاشی کے دفاتر کا بھی دورہ کیا اور سیکرٹری لیبر کے علاوہ تقریبا تمام سکریٹریز کو غیر حاضر پایا ۔ انہوں نے سیکریٹری آبپاشی سعید منگنیجو سے بات کی جو اپنے وزیر سے ملاقات کرنے کے لیے گئے ہوئےتھے۔ چیف سکریٹری نے انہیں ہدایت کی کہ وہ صبح 10 بجے اپنی ڈیوٹی سے غیر حاضر افسران کی رپورٹ بھیجیں۔

وزیر اعلیٰ سندھ نے محکمہ تعلیم کا بھی دورہ کیا اور تمام افسران بھی وہاں غیر حاضر پائے۔ وہ یکے بعد دیگر کمروں میں جاتے رہے لیکن شاید ہی کوئی سیکشن افسر یا سینئر افسر کو موجود پایا۔ انہوں نے پرنسپل سکریٹری کو محکمہ سے رپورٹ طلب کرنے کی ہدایت کی۔ محکمہ پی اینڈ ڈی میں وزیر اعلیٰ سندھ کا چیئرمین پی اینڈ ڈی محمد وسیم نے استقبال کیا جو وہاں موجود تھے۔ وہ اسے اپنے دفاترکے آس پاس لے گئے جہاں زیادہ تر چیف اور ممبر غائب پائے گئے۔ وزیراعلیٰ سندھ نے چیئرمین پی اینڈ ڈی کو ہدایت کی کہ وہ انہیں غیر حاضر افراد کی تفصیلی رپورٹ بھیجیں۔ واپسی پر ، وزیر اعلیٰ سندھ نے محکمہ بلدیات کا دورہ کیا اور عملے کے تمام ارکان ، جن میں زیادہ تر سینئرز اپنی ڈیوٹی کے فرائض سے غائب تھے۔ سکریٹری لوکل گورنمنٹ ایک کیس کے سلسلے میں عدالت میں تھے۔ وزیر اعلیٰ سندھ نے بائیو میٹرک یونٹ کا دورہ کیا اور ان سے کہا کہ وہ اس میں موجود عملے اور دیر سے آنے والوں کی تفصیلی فہرست انہیں ارسال کریں۔ وزیراعلیٰ سندھ نیو سندھ سیکرٹریٹ کے ساتویں منزل پر اپنے دفتر گئے اور سیکرٹری جنرل ایڈمنسٹریشن خالدحیدر شاہ سے ملاقات کی۔ وزیراعلیٰ سندھ نے انہیں ہدایت کی کہ وہ نئے اور پرانے سکریٹریٹ میں موجود افسران کی تفصیلی رپورٹ انہیں بھیجیں۔
زیر تعمیر پارکنگ کا دورہ:
وزیراعلیٰ سندھ نے چیئرمین پی اینڈ ڈی محمد وسیم کے ہمراہ سندھ سیکریٹریٹ کے قریب ایس ایم لاء کالج اور ایس ایم کالج کے درمیان زیر تعمیر کار پارکنگ کا دورہ کیا۔ انہوں نے سٹنگ ایریا کا بھی معائنہ کیا جس کو تفریحی مقام قرار دیا گیا ہے وہاں دکانیں ، کافی شاپس ، فاسٹ فوڈ ریستوراں بھی گئے جہاں گرینائٹ کے بنچیں قائم کی گئی ہیں۔ ہر ایک کے مستطیل بیچ کے وسط میں ایک درخت ہے تاکہ آنے والا اس درخت کے سائے نیچے بیٹھ سکیں۔ وزیراعلیٰ سندھ نے چیئرمین پی اینڈ ڈی کو ہدایت کی کہ وہ پارکنگ اور تفریحی علاقہ کی تکمیل میں تیزی لائیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں