قلات میں قدرتی گیس کا اب تک کا سب سے بڑا ذخیرہ دریافت….. یہ ذخیرہ سوئی سے بھی بڑا ہے

قلات میں قدرتی گیس کا اب تک کا سب سے بڑا ذخیرہ دریافت….. یہ ذخیرہ سوئی سے بھی بڑا ہے.

سن 2000 کے بعد بلوچستان میں گیس کے ذخائر کی یہ پہلی اہم دریافت ہے… پچھلی حکومتوں کے دور میں معدنیات کی گھریلو دولت سے خاطر خواہ فائدہ نہیں اٹھایا گیا… ناں ہی اس جانب کوئی اہم پیش رفت دیکھنے میں آئی۔

گزشتہ ادوار میں ملک کی توانائی کی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے کوئی توجہ نہیں دی.. جس سے آئے روز توانائی کا مصنوعی بحران پیدا کرکے اپنے قریبیوں کو فائدہ پہنچایا جاتا رہا.

گزشتہ ادوار میں رینٹل پاور پلانٹس اور ایل این جی پاور پلانٹس جیسے قابل اعتراض اور مہنگے ترین معاہدوں پرکیئے گئے…. جس پر کرپشن کے ہوشربا الزامات ہیں … جن کی تحقیقات نیب کررہی ہے.

30 ​​جون 2019 سے اس جگہ پر ڈرلنگ جاری تھی… پاکستان پیٹرولیم لمیٹڈ (پی پی ایل) نے گیس کے وسیع ذخائر ملنے کی تصدیق کردی ہے.

پی پی ایل نے 4500 میٹر کی گہرائی میں ماڈیولر ڈائنامکس ٹیسٹنگ (ایم ڈی ٹی) مکمل کرلی گئی ہے…

بلاک میں یومیہ 604 ملین مکعب فٹ گیس سپلائی کرنے کی صلاحیت ہے….اور مکمل بلاک کی روزانہ کی پیداواری گنجائش 2 ٹریلین مکعب فٹ تک ہوسکتی ہے۔

اندازے کے مطابق اگر ایل این جی کی جگہ اسے استمعال کیا جائے تو امپورٹ بل پر پاکستان 900 ملین ڈالر سے زیادہ کی بچت کرسکتا ہے.
سب سے پہلے اللہ کا شکر ادا کرتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں