جو لوگ راشن نہیں خرید سکتے ان کو راشن پہنچائیں گے : وزیراعظم عمران خان

وفاقی حکومت نے آٹا ، گھی ، چینی اور دالوں کی قیمتیں کم کر نے کا فیصلہ کرلیا ہے، وزیراعظم نے کہا کہ غریبوں کا احساس نہیں کرسکتے تو حکومت میں رہنے کا کوئی حق نہیں، ہرحال میں قیمتیں نیچے لاؤں گا، جو لوگ راشن نہیں خریدسکتے ان کو راشن پہنچائیں گے۔ وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت اعلیٰ سطحی اجلاس ہوا، اجلاس میں اشیائے خوردونوش کی سستے داموں فراہمی پر غور کیا گیا۔
اجلاس میں مشیرخزانہ حفیظ شیخ، حماد اظہر، جہانگیرترین، علی زیدی ،شہباز گل، ثانیہ نشتراور چیئرمین یوٹیلٹی اسٹورز بھی شریک تھے۔ اجلاس میں حکومت نے آٹا ، گھی ، چینی اور دالوں کی قیمتیں کم کر نے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے مشیرخزانہ حفیظ شیخ کو ہدایت کی کہ کسی بھی چیزکا بجٹ کاٹیں لیکن ہم غریبوں کو سہولت دیں گے۔قیمتوں میں کمی کیلئے ہر حد تک جائیں گے۔
عوام کو مہنگائی میں ریلیف دینے کیلئے کچھ بھی کرنا پڑے کروں گا۔ انہوں نے کہا کہ جن لوگوں میں اشیاء خریدنے کی سکت نہیں ان کو حکومت راشن کارڈ دے گی۔ عام آدمی کے کچن میں بنیادی اشیاء ہر حال میں پہنچائیں گے۔غریبوں کو ریلیف دینے کیلئے ہی حکومت میں آئے ہیں، اگر غریب کا احساس نہیں کرسکتے تو حکومت میں رہنے کا کوئی حق نہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں مہنگائی سابق دور حکومت کی پالیسیوں کی وجہ سے ہے۔

ذخیرہ اندوزوں نے بڑے معاملات خراب کیے، ذخیرہ اندوزوں کیخلاف بھرپور کریک ڈاؤن کریں گے۔ دوسری جانب برطانوی مشاورتی کاروباری ادارے ’’دی اکانومسٹ انٹیلی جنس یونٹ‘‘ نے پاکستان میں مہنگائی کے سلسلے میں ایک رپورٹ میں کہا کہ مہنگائی کھانے پینے کی اشیا ء کی قیمتوں میں اضافے سے متعلق ہے اور اشیا ء کی رسد میں تعطل قیمتوں میں اضافے کا باعث بنا ہے۔
ادارے نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ گندم، چینی اور ٹماٹر کی قیمتوں میں اضافہ افراط زر میں اضافے کا باعث بنا، جنوری میں مہنگائی میں اضافہ 2010 سے اب تک کی بلند ترین سطح ہے، سال 2019 میں افراط زر کی اوسط شرح 9.4فیصد رہی۔عالمی سطح پر کاروبار کے سلسلے میں پیش گوئی کرنے والے ادارے نے اپنی رپورٹ میں پیشگوئی کی ہے آئندہ چند ماہ تک پاکستان میں مہنگائی میں اضافے کا رجحان برقرار رہے گا، زرعی پیداوار ٹڈی دل کے حملے کے باعث متاثر ہوگی۔رپورٹ میں کہا گیا کہ مرکزی بینک افراط زر کو قابو میں رکھنے کے لیے مانیٹری پالیسی سخت رکھے گا۔



اپنا تبصرہ بھیجیں