حکومت ملک میں کپا س کی پیداوار بڑھانے کے لیے ہنگامی بنیا دوں پر تمام ضروری اقدامات کر ے۔

پر یس ریلیز
وفاق ایوانہا ئے تجا رت وصنعت پاکستان

حکومت ملک میں کپا س کی پیداوار بڑھانے کے لیے ہنگامی بنیا دوں پر تمام ضروری اقدامات کر ے۔
صدر ایف پی سی سی آئی، میاں انجم نثا ر

کراچی(7 فروری2020) فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈانڈسٹری کے صدر میاں انجم نثارنے ملک میں کپا س کی کم پیداوار پر تشو یش کا اظہار کر تے ہو ئے تجو یز دی کہ حکومت ملک میں کپا س کی پیداوار بڑھانے کے لیے ہنگامی بنیا دوں پر تمام ضروری اقدامات کر ے۔ انہو ں نے کہاکہ کپا س کی پیداوار میں تیز ی سے 15ملین گا نٹھوں سے 9.45ملین گا نٹھو ں تک کمی واقع ہوئی ہے جس کی بنیا دی وجہ فی ایکڑ کم پیداوارکپا س کے لیے مو زوں رقبے کو دوسری فصلو ں کی کا شت کے لیے استعمال کر نا، غیر مصدقہ کپا س کے بیج اورغیر معیاری کیٹرے مار ادویا ت ہے۔کپا س کی پیداوار اور مقا می ملو ں کی کھپت میں 50لاکھ گا نٹھو ں کا فرق ہے لہذا مقا می ٹیکسٹا ئل انڈ سٹر ی اپنی بنیادی خام مال کی ضروریات کو پورا کر نے اور پاکستان کی برآمدات یقینی بنانے کے لیے بیرون ملک سے رو ئی درآمد کر نے پر مجبو ر ہے۔ ایف پی سی سی آئی کے صدر میاں انجم نثار نے مزید کہاکہ ما ضی میں کپا س کی پیداوار پاکستان مقا می طلب کے مطابق اور ہمسا یہ ملک انڈیاسے زائد بھی1991-92 میں پاکستان میں کپاس کی پیداوار 12.8ملین گا نٹھیں کی تھی جبکہ انڈیا میں روئی کی11.9ملین گانٹھیں تھی۔ بد قسمتی سے پالیسیوں میں روئی کی کا شت سے لا پرواہی کی وجہ سے پاکستان کو کپا س پیداوار میں کمی کا سا منا کرنا پڑرہا ہے۔ موجو دہ سال میں پاکستان میں کپا س کی پیداوار 9.45ملین گا نٹھ ہے جبکہ انڈیا میں کپا س کی پیداوار 31.2ملین گا نٹھیں ہے۔ امریکہ کے محکمہ زراعت کے مطابق چین میں کپا س کی پیداوار 27.2 ملین گا نٹھیں ہے اور امریکہ میں کپاس کی پیداوار 20.2ملین گا نٹھیں ہے۔ میا ں انجم نثار نے تجو یز پیش کی کہ آنے والے بر سو ں میں کپا س کی پیداوار میں اضافہ کر نے کے لیے حکومت کو ہنگا می بنیادوں پر کام کر تے ہوئے اور تمام تر ضروری اقدامات کر نے چا ہئیں جس سے کپا س کی پیداوار بڑھے۔ کا شتکا روں کو تعلیم سے آراستہ کرنے کے ساتھ ساتھ معیاری بیج کے استعمال کر نے کے لیے چار سے پا نچ عا لمی کمپنیو ں کو بورڈ پر لے اور غیر معیا ری بیجو ں کے فروخت پر پابند ی عا ئد کر ے۔

ڈاکٹر اقبا ل تھہیم
سیکر یٹری جنرل ایف پی سی سی آئی

اپنا تبصرہ بھیجیں