پٹرولیم کمپنیوں نے ڈیفالٹر پیٹرول پمپوں کو سربمہر کر نا شروع کر دیا ۔ملک میں بے روزگاری میں اضافہ

ملک میں مختلف پٹرولیم کمپنیوں نے ڈیفالٹر پیٹرول پمپوں کو سربمہر کرنا شروع کردیا ہے جس کی وجہ سے بڑی تعداد میں وہاں کام کرنے والے ملازمین بے روزگار ہوگئے ہیں ۔کراچی سمیت مختلف شہروں میں ڈیفالٹر پیٹرول پمپوں کو کام کرنے سے روک دیا گیا ہے اور ان کی سپلائی بند کر دی ہے پٹرول پمپوں کے بند ہوجانے کی وجہ سے بڑی تعداد میں ماں کام کرنے والے ملازمین بے روزگار ہوگئے ہیں کراچی میں کال ٹیکس پاکستان اسٹیٹ آئل اور شیل پٹرولیم سمیت مختلف کمپنیوں کے ان پٹرول پمپس فائی بند کر دی گئی ہے جنہوں نے کمپنیوں کی ادائیگی نہیں کی اور ان کا نام ڈیفالٹرز لسٹ میں شامل ہوچکا ہے اور کافی عرصہ انتظار کے باوجود ادائیگی نہ ہونے کے بعد ملا پٹرول پمپوں کو کمپنیوں نے کام کرنے سے روک دیا ہے جس کے نتیجے میں پٹرول پمپوں کو مختلف شامیانے کا نعتیں اور دیواریں کھڑی کر کے بند کر دیا گیا ہے اور وہاں کام کرنے والے ملازمین بڑی تعداد میں بیروزگار ہوگئے ہیں ان کے گھروں میں چولہے ٹھنڈے پڑ گئے ہیں ۔شارہ فیصل اور یونیورسٹی روڈ سمیت مختلف علاقوں میں جو پیٹرول پمپ بند کیے گئے ہیں ان کی وجہ سے قریبی علاقوں کے صارفین کو مشکلات کا سامنا ہے جبکہ متبادل پٹرول پمپوں کی چاندی ہوگئی ہے اور ان کے مالکان بہت خوش ہیں ۔لیکن بند ہونے والے پٹرول پمپوں کے ملازمین بہت پریشان ہیں پٹرول معبر کام کرنے والے ملازمین موجودہ صورت حال کی وجہ سے غیر یقینی سے دوچار ہیں اور انہیں اپنے مستقبل کی فکر لاحق ہو گئی ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں