سپریم کورٹ میں ایس بی سی اے سے متعلق سندھ حکومت کی سرزنش پربلاول ہاﺅس میں چیئرمین پیپلز پارٹی اور وزراءکی اہم بیٹھک

کراچچی(اسٹاف رپورٹر)سپریم کورٹ میں ایس بی سی اے سے متعلق سندھ حکومت کی سرزنش پربلاول ہاﺅس میں چیئرمین پیپلز پارٹی اور وزراءکی اہم بیٹھک کا انکشاف،بلدیاتی اداروں کے معاملات چلانے والے وزیر اعلی سندھ کے اسپیشل اسسٹنٹ شہزاد میمن کی کارکردگی پر چیئرمین پیپلز پارٹی نے عدم اطمینان اور شدید برہمی کا اظہار کردیا،ایس بی سی اے کے معاملات سمیت بلدیاتی اداروں میں افسران کی تعیناتیاں اور تبادلے شہزاد میمن کی ہدایت پر کئے جاتے تھے،متعدد ڈی ایم سیز میں کرپٹ افسران کی حالیہ تعیناتیاں بھی شہزاد میمن کے حکم پر کی گئیں،چیئرمین پیپلز پارٹی کی برہمی کے بعد شہزاد میمن کو وزیر اعلی سندھ کے اسپیشل اسسٹنٹ کے عہدے سے ہٹائے جانے پر غور۔انتہائی باوثوق ذرائع کے مطابق سپریم کورٹ آف پاکستان میں سندھ حکومت کی سخت سرزنش کے بعد بلاول میں پیپلز پارٹی کے اہم رہنماﺅں کی بڑی بیٹھک ہونے کا انکشاف ہوا ہے جس میں وزراءنے بھی شرکت کی،ذرائع کا کہنا ہے کہ اجلاس میں چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے وزیر اعلی سندھ کے اسپیشل اسسٹنٹ شہزاد میمن کی کارکردگی پر شدید برہمی کا اظہار کیا جس کے بعد انہیں مذکورہ عہدے سے ہٹائے جانے پر غور کیا گیا،ذرائع کا کہنا ہے کہ ایس بی سی اے کے تمام معاملات شہزاد میمن دیکھتے تھے جبکہ افسران ربڑ اسٹیمپ بن کر کام کرنے پر مجبور تھے،واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے ایس بی سی اے کی کارکردگی پر برہمی کا اظہار کیا اور اس موقع پر ڈائریکٹر جنرل ایس بی سی اے ظفر احسن کو عہدے سے ہٹانے کا حکم جاری کیا تھا جس کے بعد چیف سیکریٹری سندھ نے ڈی جی ایس بی سی اے کو عہدے سے ہٹانے کا نوٹیفکیشن بھی جاری کردیا ہے،سندھ حکومت کے قریبی زرائع کا کہنا ہے کہ تمام بلدیاتی اداروں بلخصوص ایس بی سی اے ،واٹر بورڈ،ڈی ایم سیز،ایم ڈی اے،ایل ڈی اے ،کے ڈی اے کے تمام معاملات شہزاد میمن کی ہدایت پر چلائے جارہے ہیں،جس میں افسران کی تعیناتیاں اور تبادلے بھی شہزاد میمن کے حکم پر کئے جارہے ہیں،ذرائع کا کہنا ہے کہ مذکورہ بلدیاتی اداروں میں تعینات افسران ربڑ اسٹیمپ بن کر رہ گئے ہیں،موجودہ صورتحال سے آگاہ سندھ حکومت کے حکام نے اداروں کی ابتر صورتحال اور سپریم کورٹ میں سندھ حکومت کی سرزنش کا ذمہ دار وزیر اعلی سندھ کے اسپیشل اسسٹنٹ شہزاد میمن کو قرار دیدیا ہے،ذرائع کا کہنا ہے کہ پیپلز پارٹی کی اعلی قیادت نے شہزاد میمن کو اسپیشل اسسٹنٹ کے عہدے سے برطرف کرنے پر غور شروع کردیا ہے جبکہ شہزاد میمن کے ساتھ ساتھ رحمت اللہ شیخ کو بھی بلدیاتی معاملات سے دور رہنے کی ہدایت کی گئی ہے جو کہ وزیر بلدیات سندھ کے کوآردنیٹر بن کر افسران کو ہدایات جاری کرتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں