مفاہمت نہ سکھا جبر ناروا سے مجھے …. میں سر بہ کف ہوں لڑا دے کسی بلا سے مجھے

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ’انڈین وزیر اعظم نارمل انسان نہیں ہیں۔‘ وہ نریندر مودی کے اس بیان کہ ’پاکستان کو 11 روز میں فتح کیا جا سکتا ہے‘ کا حوالہ دے کر بات کر رہے تھے۔

بدھ کو یوم کشمیر کی مناسبت سے پاکستان کے زیرانتظام کشمیر کی اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ ’جب بھی نسل اور قوم پرستی کے نام پر نفرتیں پھیلائی گئیں اس سے خون بہا، 80 لاکھ کشمیریوں کو ایک قسم کی جیل میں بند کر دیا گیا ہے۔‘

عمران خان نے کہا کہ ’نریندر مودی نے پاکستان مخالف مہم پر الیکشن جیتا اور ابھی ہندوتوا کے فلسفے پر چل رہے ہیں۔ وہ کسی بھی وقت کوئی مہم جوئی کر سکتے ہیں، خود ہی حملہ کروا کے جواز بنا سکتے ہیں، لیکن ہم تیار ہیں۔‘

اپنے خطاب میں انہوں نے مزید کہا کہ ’جنرل اسمبلی کے اجلاس کے بعد اسلام آباد میں دیے جانے والے ایک دھرنے کی وجہ سے کشمیر ایشو کے حوالے سے جدوجہد متاثر ہوئی۔‘

اس سے قبل پاکستان کے زیر انتظام کشمیر کے وزیراعظم راجا فاروق حیدر جن کا تعلق مسلم لیگ ن سے ہے، نے خطاب کرتے ہوئے سابق پاکستانی وزیراعظم نواز شریف کا ذکر کیا اور عمران خان سے اپنے ملک کے اندر اتفاقِ رائے پیدا کرنے کی بات کی۔

اس کے جواب میں عمران خان نے ایک بار پھر سابق حکمران کو کرپشن کا ذمہ دار قرار دیا اور کہا کہ ان کی کسی سے ذاتی دشمنی نہیں اور یہ کہ جنہوں نے ملک لوٹا ان سے وہ مفاہمت نہیں کر سکتے۔

عمران خان نے ساتھ میں یہ شعر بھی پڑھا:

مفاہمت نہ سکھا جبر ناروا سے مجھے …. میں سر بہ کف ہوں لڑا دے کسی بلا سے مجھے

عمران خان کی تقریر پر سوشل میڈیا صارفین نے ان کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے جبکہ ان کی پارٹی کے ورکرز نے ہمیشہ کی طرح ان کے حق میں ٹوئٹر پر مہم شروع کر دی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں