سال 2020 حکیم محمد سعید کی یاد میں سو سالہ جشن کا سال

کراچی پریس کلب کے ایک سابق صدر اپنی یادیں تازہ کرتے ہوئے بتا رہے تھے کہ حکیم محمد سعید کی فٹنس شاندار تھی انہوں نے طب کے علم کا سب سے پہلے اپنی صحت پر بھرپور تجربہ کیا اور ان کی صحت اور تندرستی قابل رشک رہی ویزا سادہ اور طرز زندگی انتہائی آسان تھا اکثر ان سے بات ہوتی تو معاملات زندگی پر بھی نظر دوڑاتے اور زندگی کو ساتھ رکھنے پر زور دیتے تھے ایک روز ایسے ہی حضرا ہے مذاق ان سے کہہ دیا کہ حکیم صاحب آپ نے تو موت کے سارے راستے ہی بند کر دیے ہیں جس پر وہ پورے اعتماد مسکراہٹ کے ساتھ وہ لے نہیں موت تو برحق ہے اور موت تو ایک دن آنی ہے لیکن میں نے اپنی صحت کا خیال ضرور رکھا ہے ۔
سینئر صحافی کا کہنا ہے کہ پھر دنیا نے دیکھا وہی ہوا جس کا مجھے خدشہ تھا کہ حکیم محمد سعید کی وفات طبعی انداز سے نہیں ہوئی بلکہ انہیں قاتلانہ حملے میں شہید کردیا گیا ۔
حکیم محمد سعید بلاشبہ اپنے ہی نہیں بلکہ آنے والے ادوار کے بھی عظیم انسان تھے انکی خدمات قابل قدر قابل تعریف اور قابل تقلید مثال بن چکی ہیں ۔
جاری ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں