آل پاکستان لوکل گورنمنٹ ورکرز فیڈریشن کے رہنماء شیخ محمد ادریس انتقال کرگئے، رہنماؤں کی تعزیت

آل پاکستان لوکل گورنمنٹ ورکرز فیڈریشن کے رہنما،سیکریٹری یونین کونسل وسابق ملازم میونسپل کمیٹی قلعہ دیدارسنگھ شیخ محمد ادریس انتقال کرگئے۔انکے انتقال پر آل پاکستان لوکل گورنمنٹ ورکرز فیڈریشن کے مرکزی چیئرمین سیدذوالفقارشاہ(کراچی)صدر ملک نوید اعوان (پشاور) جنرل سیکریٹری ملک نصیر الدین ہمایوں (گجرانوالہ)ڈپٹی جنرل سیکریٹری محمد یاسین وٹو(پاک پتن) سینئر نائب صدر رسول بخش شاہانی (لاڑکانہ)نائب صدر گل نواز سواتی(لاہور) چیئرمین صوبہ پنجاب غلام محمد ناز صدارتی تمغہ امتیاز (راولپنڈی) صدر میاں سرور معراج (لاہور) جنرل سیکریٹری رمضان دانش(گجرات) چیئرمین صوبہ سندھ حافظ مشتاق کوریجو (نوڈیرو)جنرل سیکریٹری اکرم راجپوت (حیدرآباد) ڈپٹی جنرل سیکریٹری علی مردان شیخ (سکھر) چیئرمین صوبہ بلوچستان غلام نبی کاکڑ (زیارت) صدر جان محمد جتک (کوئٹہ) جنرل سیکریٹری محمد عالم سموں (اوستہ محمد) چیئرمین صوبہ کے پی کے سوار خان (تخت بائی) جنرل سیکریٹری ظہیر احمد شیخ (ایبٹ آباد) اور دیگر نے گہرے رنج وغم کا اظہار کرتے ہوئے سوگوار خاندان سے دلی ہمدردی اور تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کی خدمات کو سراہا ہے اور انکی مغفرت اور درجات کی بلندی کے لیے دعا کی ہے۔
وزیراعلیٰ سندھ کی جانب سے بلدیاتی اداروں کی گرانٹ بند کرنے، اپنے وسائل پیدا کرنے اور گھوسٹ ملازمین کو فارغ کرنے کی ہدایت پر آل پاکستان لوکل گورنمنٹ ورکرز فیڈریشن کا خیرمقدم، تنخواہوں پنشن کی ادائیگی آن لائن ٹریژری کے ذریعے کرنے، آکٹرائے گڈز ٹرانسپورٹ ٹیکس کو بحال کرکے بلدیاتی اداروں کو ٹیکسیشن کی خودمختاری دی جائے۔
آل پاکستان لوکل گورنمنٹ ورکرز فیڈریشن سندھ کے چیئرمین حافظ مشتاق کوریجو، صدر سید ذوالفقار شاہ، جنرل سیکریٹری اکرم راجپوت، ڈپٹی جنرل سیکریٹری علی مردان شیخ نے وزیراعلیٰ سندھ کی جانب سے صوبے بھر کے بلدیاتی اداروں کی گرانٹ بند کرنے، اپنے وسائل پیدا کرنے اور گھوسٹ ملازمین کو فارغ کرنے کی ہدایت کا آل پاکستان لوکل ورکرز فیڈریشن سندھ کی جانب سے خیرمقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ 2007 سے PFC ایوارڈ کا اعلان نہ ہونے سے پہلے ہی صوبے بھر کے بلدیاتی ادارے مالی بحران کا شکار ہوچکے ہیں جس کی وجہ سے صوبائی حکومت کو صرف بجلی کے بلز بھرنے کیلئے کروڑوں روپیوں کی گرانٹ بلدیاتی اداروں کو دینی پڑی۔ وسائل کی غیر منصفانہ تقسیم کے باعث بلدیاتی اداروں کے ملازمین کی تنخواہوں اور پنشن کی ادائیگی کیلئے بھی اسپیشل گرانٹ عدالتوں کے احکامات کے تحت جاری کی جارہی ہے، انہوں نے کہا کہ بلدیاتی ملازمین کی تنخواہوں پنشن کی ادائیگی براہ راست ٹریژری کے ذریعے آن لائن جاری کرکے ایک جانب تو گھوسٹ ملازمین کا خاتمہ کیا جاسکتا ہے دوسری جانب تنخواہوں پنشن کی ادائیگی میں باقاعدگی بھی لائی جاسکتی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ بلدیاتی ٹیکسز کے نفاذ کی اگر حکومت سندھ منظوری جاری کردے تو پھر کافی حد تک وسائل میں اضافہ ممکن ہوسکتا ہے۔ اس سلسلے میں بلدیاتی اداروں کے آکٹرائے ٹیکس گڈز ٹرانسپورٹ ٹیکس اور سی ڈیوز ٹیکس کو بحال کرکے بھی بلدیاتی وسائل میں اضافہ ممکن ہے۔ انہوں نے وزیراعلیٰ سندھ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ بلدیاتی اداروں کی خودمختار حیثیت کو بحال کریں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں