بیرسٹر فروغ نسیم کو گورنر سندھ بنائے جانے کا امکان

مرکزی حلقے عشرت العباد طرز کا گورنر لے کر آنا چاہتے ہیں
انتہائی باخبر ذرائع سے معلوم ہوا کہ طاقت کے مرکزی حلقوں نے بیرسٹر فروغ نسیم کو گورنر سندھ بنائے جانے کے لیے غوروخوص شروع کردیا ہے اور امکان ہے جلد ہی سپریم کورٹ میں آرمی چیف کی تعنیاتی سے متعلق فیصلے پر نظر ثانی کی درخواست پر فیصلے کے بعد بیرسٹر فروغ نسیم کو عمران اسماعیل کی جگہ گورنر سندھ مقرر کردیا جاۓ۔ فروغ نسیم کو گورنر بنانے کا فیصلہ اس لیے بھی کیا جارہا ہے کیونکہ جو کردار مشرف دور اور پھر اس کے بعد پی پی اور نواز شریف کے دور میں بھی عشرت العباد نے بطور گورنر ادا کیا اب وہ ہی کردار ایک لمبے عرصے کے لیے فروغ نسیم کو دیا جائیگا اور وہ حکومت اتحادی جماعتوں اور اپوزیشن کے درمیان پُل کا کردار ادا کریں گے کیونکہ فروغ نسیم کو قانونی امور پر بھی گرفت ہے اس لیے وہ موجودہ حکومت کے لیے سندھ میں انتہائ اہم کردار ادا کرسکتے ہیں اس کے ساتھ ساتھ پی ٹی آئی کی سندھ میں بڑی اتحادی متحدہ قومی موومنٹ کی شکایات کا بھی ازالہ ہوسکے گا۔ کیونکہ فروغ نسیم سابق صدر پرویز مشرف کے انتہائ قریبی مانے جاتے ہیں اس لیے GDA کو بھی اس پر کوئی اعتراض نہیں ہوگا۔ ذرائع کے مطابق اگر فروغ نسیم کو گورنر مقرر کیا جاتا ہے تو ملیکہ بخاری کو وزیر مملکت براۓ قانون مقرر کیا جائیگا جو پہلے سے وزارت قانون میں فروغ نسیم کے ساتھ قانون سازی میں نمایاں کردار ادا کررہی ہیں۔