حنیف گوہر کے خاندان کے لیے پہلے سانحہ پھر خوشی اور آخر میں سوگ کا سال ثابت ہوا

تعمیراتی دنیا کی مشہور شخصیت اور گروپ آف کمپنیز کے چیئرمین محمد حنیف گوہر کے خاندان کے لئے 2019 کا سال کئی حوالوں سے نشیب و فراز کا سال ثابت ہوا سماجی خدمات میں مصروف اس خاندان کو پہلے تو ایک عظیم سانحہ سے دوچار ہونا پڑا جب انہیں بغور کے دو بھائیوں میں جھگڑا ہوا اور ایک بھائی سے گولی چل گئی جس کی زد میں آ کر دوسرا بھائی اور بھابھی جان کی بازی ہار بیٹھے اور گولی چلانے والے بھائی نے بعد میں خود کو گولی مار کر خود کشی کرلی ۔یہ بہت بڑا سانحہ تھا جس سے خاندان دوچار ہوا دونوں متاثرہ فیملی اس کے گیارہ بچے یتیم ہو گئے جن کی ذمہ داری باقی بھائیوں پر آگئی بزرگ والد کو یہ صدمہ برداشت کرنا پڑا لیکن کتنے دن ۔۔۔۔سال کے آخر میں وہ بھی رضائے الہی سے انتقال کر گئے انہیں آخری دنوں میں اس بات کا کہ انہوں نے اپنے لئے قبر کی جگہ مختص کر آئی تھی لیکن اپنے سامنے جوان اولاد کو اس میں سپردخاک کرنا پڑا تھا ۔حنیف گوہر کے والد بھی 2019 میں ہی اپنی زندگی کا سفر مکمل کرکے اس فانی دنیا سے کوچ کرگئے اور اپنے خالق  حقیقی سے جا ملے ہے ۔سال 2019 میں حنیف گوہر نے اپنی بیٹی فریال گوہر کی رخصتی بھی کی فریال کی شادی اثمار شیخ سے ہوئی کراچی میں ہونے والی ایک پر وقار تقریب تھی جسے لوگ مدتوں یاد رکھیں گے اس شادی کی تقریب میں ملک اور بیرون ملک سے خاندان کے رشتہ داروں اور دوست احباب  کی بڑی تعداد نے شرکت کی ۔2019 کا سال جاتے جاتے حنیف گوہر کو بزنس پالیٹکس کی دنیا میں بڑا دھچکا پہنچا گیا کیونکہ یو بی جی کو شکست ہوئی اور فیڈریشن کے الیکشن میں تختہ پلٹ گیا ۔زندگی کے نشیب و فراز کا جرا ت مندی اور بہادری سے مقابلہ کرنے والے محمد حنیف گوہر بنیادی طور پر ایک دلیر زندہ دل انسان ہیں ۔وہ صاف کو اور مخلص انسان ہیں اور زندگی کے نشیب و فراز کا سامنا کرنے کے لیے ہمہ وقت تیار رہتے ہیں قدرت کے ہر فیصلے کوہ ندا پیشانی سے قبول کرتے ہیں اور عزم و ہمت کا مظاہرہ کرتے ہوئے آگے کا سفر جاری رکھتے ہیں



اپنا تبصرہ بھیجیں